Code : 1049 21 Hit

صحت کے لئے مفید سبزیاں اور ان کے استعمال

چقندر سلاد میں استعمال کرنا ہو تو اسے ابال کر کرکش کرکے استعمال کریں، اسے چھیلتے ہوئے ہاتھ رنگ دار ہوجاتے ہیں۔ اس سے بچنے کا آسان طریقہ یہ ہے کہ ان کو ابال کر اخبار پر رکھ دیں اور بغیر ہاتھ لگائے اخبار کے اندر رکھے رکھے ہاتھوں سے اخبار سمیت مل مل کر چھلکے اتار کر چھری سے بغیر پکڑے کاٹ لیں۔ اس طرح ہاتھ گندے نہیں ہوں گے۔ چقندر گرم تر سبزی ہے۔ لہٰذا سردیوں میں کھانی چاہیے۔ یہ پیٹ کی گیس کو ختم کرتے ہیں۔

ولایت پورٹل: آپ نے گوشت اور دالیں کھائی بھی ہوں گی اور ان کے فوائد سے واقف بھی ہوں گے لیکن کیا آپ سبزیوں کے فوائد سے واقف ہیں؟ کچھ لوگ سبزیوں کو کھاتے ہوئے منھ بناتے ہیں لیکن جدید تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ سبزیاں کھانے سے انسان کی صحت متوازن رہتی ہے جبکہ سبزیوں کو دیگر مفیدکاموں کے لئے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔
اگر آلو کے چپس کاٹنے کے بعد ان کو نمک اور سرکہ ملے پانی میں ڈبو دیں۔ جب تلنے ہوں تو پانی نچوڑ کر مل لیں، چپس دوبارہ تلنے سے زیادہ خستہ اور کرارے بنتے ہیں۔بھاپ سے جسم کا کوئی حصہ جل جائے تو اس پر کچا آلو رگڑیں۔ آبلہ نہیں پڑے گا۔
بعض اوقات سالن میں آلو بالکل گل جاتے ہیں اور بکھرنے لگتے ہیں۔ آلو چھیل کر کاٹ کر نمک لگا کر دس منٹ کے لئے رکھ دئیے جائیں اور پھر دھوکر ہانڈی میں ڈالیں تو پکنے کے بعد وہ گھلیں گے نہیں۔
آنکھوں کے ورم دور کرنے کے لئے آلو کے چھلے ہوئے ٹکڑے آنکھوں پر رکھنے سے بہت سکون ملتا ہے۔جس پانی میں آلو ابالے گئے ہوں، اس پانی سے چاندی کے برتن دھوئیں تو صاف ہوجاتے ہیں۔
چقندر
چقندر سلاد میں استعمال کرنا ہو تو اسے ابال کر کرکش کرکے استعمال کریں، اسے چھیلتے ہوئے ہاتھ رنگ دار ہوجاتے ہیں۔ اس سے بچنے کا آسان طریقہ یہ ہے کہ ان کو ابال کر اخبار پر رکھ دیں اور بغیر ہاتھ لگائے اخبار کے اندر رکھے رکھے ہاتھوں سے اخبار سمیت مل مل کر چھلکے اتار کر چھری سے بغیر پکڑے کاٹ لیں۔ اس طرح ہاتھ گندے نہیں ہوں گے۔ چقندر گرم تر سبزی ہے۔ لہٰذا سردیوں میں کھانی چاہیے۔ یہ پیٹ کی گیس کو ختم کرتے ہیں۔
سلاد یا سبز دھنیا
دونوں ہی بہت مفید سبزیاں ہیں مگر نازک بھی بہت ہیں۔ ہر روز ان کو بازار سے منگوانا مشکل ہوتو یوں کریں کہ گلاس یا جگ میں ٹھنڈا پانی بھریں اور سلاد یا ہرے دھنیا کی ڈنڈیاں پانی میں ڈبودیں۔ تین چار روز تک بالکل تازہ رہیں گے۔ روزانہ ضرورت کے مطابق سلاد کے پتے پانی سے نکالیں اور استعمال کریں۔ فریج میں دھنیا یا سلاد رکھنا ہو تو اسے پلاسٹک کے لفافے میں کبھی نہ رکھیں۔ بلکہ کاغذ کے لفافہ میں ڈال کر رکھیں یا اخبار میں لپیٹ کر رکھ لیں۔
سبزیوں کو اخبار میں لپیٹ کر رکھیں تو وہ زیادہ دیر تازہ رہیں گی۔ فریج سے باہر بھی رکھیں تو پانی چھڑک کر اخبار میں لپیٹ کر رکھیں۔
شلجم اور کریلے کی کرواہٹ
نئے شلجم جب مارکیٹ میں آتے ہیں تو تھوڑے کھارے ہوتے ہیں۔ شلجموں کا کھارا پن دور کرنے کے لئے یوں تو ان کا پکاتے ہوئے سالن میں گڑ یا چینی ڈالی جاتی ہے۔ مگر کچھ لوگ سالن میں مٹھاس پسند نہیں کرتے۔ اس لئے جب شلجم چھیل کر ٹکڑے کریں تو ان پر نمک لگا کر رکھ دیں کچھ دیر بعد اچھی طرح دھولیں۔ اس طرح کھارا پانی نکل جائے گا۔ کریلے بھی چھیل کر، کاٹ کر، نمک لگاکر رکھ دیں اور پھر اچھی طرح دھولیں تو ان کی کڑواہٹ ختم ہوجاتی ہے۔
کریلے اور ان کے چھلکے شوگر کے مریضوں کے لئے بہت مفید ہیں۔ چھلکوں کو دھوکر نمک لگاکر رکھ دیں اور پھر نچوڑ کر پانی نکال دیں۔ تیل میں تل کر سالن کی طرح بغیر گوشت کے بھی بہت لذیذ بنتے ہیں۔ کریلے کھانے سے پیٹ کے کیڑے مر جاتے ہیں۔ خون صاف ہوتا ہے۔ کریلے کا رس پینے سے پتھری صاف ہوجاتی ہے۔ جن کے چہرے پر کیل مہاسے ہوں، ان کو کریلے ضرور کھانا چاہئیں کیونکہ خون کو صاف کرکے جلد کو بھی شفاف بناتے ہیں۔شلجم کے پتوں سمیت پکائیں تو قبض کا مرض دور ہوجاتا ہے۔جن لوگوں کو پیشاب رک رک کر آتا ہو، وہ ہفتہ بھر شلجم کھائیں تو ٹھیک ہوجائے گا۔ جسمانی خشکی کی شکایت ہو تو کچے شلجم کھانے سے دور ہوجاتی ہے۔ کمزور بینائی کو کچے شلجم کھانے سے دور کیا جاسکتا ہے۔
ٹینڈے
گرمیوں میں بعض لوگوں کو ہاتھ پاؤں جلنے، پیشاب کی کمی اور جلن کی شکایت ہوتی ہے۔ ٹینڈے کھانے سے یہ تکلیف دور ہوجاتی ہے۔ خشک کھانسی کی شکایت ہو تو ٹینڈے کے بھجیا یا سالن کے کثرت استعمال سے تکلیف دور ہوجاتی ہے کیونکہ ٹینڈے حلق کی نالی کو ترکرتے ہیں۔
بند گوبھی
کچی گوبھی کھانا بہت مفید ہے۔ شوگر کے مریضوں کے لئے مفید تر ہے۔ سلاد کے طور پر کھانے کے لئے اسے اسی وقت کاٹنا چاہیے جب کھانے کا وقت ہو کیونکہ اس میں شامل وٹامن سی ہوا میں تحلیل ہوجاتے ہیں۔ اس کو دھو کر کاٹنا چاہیئے کیونکہ کاٹ کر دھوئیں تو تمام وٹامنز پانی کے ساتھ بہہ جاتے ہیں۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम