آل نہیان کی صیہونیوں کی ایک اور خدمت؛یمن کے سقطری ہوائی اڈے پر جاسوسی اڈے کا قیام

باخبر ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ متحدہ عرب امارات نے یمن کے سقطری ہوائی اڈے پر صیہونی حکومت کے لیے ایک جاسوسی مرکز قائم کیا ہے۔

ولایت پورٹل:وکاله الصحافه الیمنیه ویب سائٹ نے یمن کے مقبوضہ ہوائی اڈے سقطری پر اسرائیلی جاسوس اور انٹیلی جنس مرکز کے قیام کی اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ الہلال امارات کمپنی نے صیہونی حکومت کے ساتھ جزیرہ سقطری کے مرکز حدیبو کے ہوائی اڈے پر اسرائیلی فضائیہ کے لیے جاسوسی اور خفیہ مرکز بنانے کا معاہدہ کیا ہے ،سائٹ نے باخبر ذرائع کے حوالے سے یہ اطلاع دی کہ متحدہ عرب امارات نے گزشتہ سال کے وسط میں صہیونی حکومت کے ساتھ اپنے تعلقات کے عام ہونے کے بعد سے اسرائیلی فوجی موجودگی کے لیے سقطری کے دروازے کھلے عام کھولے ہیں۔
واضح رہے کہ  صیہونی حکومت کے ساتھ اپنے تعلقات کو معمول پر لانے سے پہلے ہی متحدہ عرب امارات جس نے جنوبی یمن عبوری کونسل کے عناصر کے ذریعے صوبہ لحج ، صوبہ ضالع کے جنوب میں ، صوبہ شبوہ کے مغرب میں ، صوبہ حضرموت کے جنوب میں اور صوبہ عدن کے جنوب مغرب میں قبضہ کر رکھا ہے ،نے یمن کے جزیرے (بحیرہ مکران کے مغرب) پر صیہونیوں کے قدم جمادیے تھےاورانھیں یہاں فوجی اڈہ بنانے کی اجازت دی تھی۔
واضح رہے کہ امارات نے جنوبی یمن کے جزیرے سقطری کو بھی صہیونی حکومت کے حوالے کیا تاکہ صیہونی دشمن کو موقع ملے کہ وہ اس اسٹریٹجک خطے میں اپنی  خطرناک نقل و حرکت بڑھا سکے،یادرہے کہ  چند ماہ قبل  متحدہ عرب امارات کئی جہازوں کے ذریعہ اسرائیلی فوجی سازوسامان سقطری کی بندرگاہ پر لایا اور سخت سکورٹی کے تحت کارگو اتارا گیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین