Code : 4095 9 Hit

جو بھی یہ سمجھتا ہے کہ بیروت دھماکے کے بعد نصراللہ خود اعتمادی کھو چکے ہے اسے دوبارہ سوچنا چاہئے:صیہونی میڈیا

صیہونی میڈیا نے جمعہ کے روز لبنانی حزب اللہ کے سکریٹری جنرل کی تقریر پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سید حسن نصراللہ اعتماد کے ساتھ بات کی۔

ولایت پورٹل:المیادین چینل کی رپورٹ کے مطابق صیہونی میڈیا نے جمعہ کے روز حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ کی تقریر پر ردعمل کا اظہار کیا، صہیونی میڈیا کا کہنا ہے کہ جو بھی یہ سمجھتا ہے کہ بیروت دھماکے کے بعد نصراللہ خود اعتمادی کھو چکے ہے اسے دوبارہ سوچنا چاہئے،یادرہے کہ منگل کے روز بیروت میں ہونے والے دھماکے کے بعد حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سیدحسن نصراللہ نے جمعہ کی شام خطے اور لبنان کی صورتحال کے بارے میں بات کی۔
حزب اللہ کے سکریٹری جنرل نے بیروت سانحہ کا  سیاسی استحصال  نہ کرنےکی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاکچھ لوگوں نے اس سانحہ کا رخ موڑ کر اس کو حزب اللہ کے اسلحے کے ڈپووں میں دھماکے سے منسوب کرنے کی کوشش کی  تاکہ حزب اللہ کو بدنام کرسکیں،انھوں نے اس بات پر بھی زور دیاکہ اس طرح کے دعوے کرنے میں ان میڈیا اور سیاسی شخصیات کا مقصد حزب اللہ کے خلاف لبنانی عوام کو اکسانا تھاتاکہ اس تنظیم کو بدنام کیا جاسکے۔
سید حسن نصراللہ نے کہا کہ حزب اللہ کے خلاف یہ سب سے بڑا ظلم تھا اور میں واضح طور پر بیروت کی بندرگاہ میں حزب اللہ سے تعلق رکھنے والے کسی بھی ہتھیاروں اور دھماکہ خیز مواد کے ڈپو کے وجود سے انکار کرتا ہوں، حزب اللہ کے پاس بیروت کی بندرگاہ میں اس طرح کے ڈپو کبھی نہیں تھے ، نہ ماضی میں تھے اور نہ اب ہیں، انہوں نے کہا کہ بیروت کے سانحے میں حزب اللہ خود  اس  سےمتاثرہ قوم کا حصہ ہے۔
حزب اللہ کے سکریٹری جنرل نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی اس طرح کے موقف کو اپناتے دیکھا ہے، جو لوگ ایسے الزامات لگاتے ہیں وہ اتنا جھوٹ بولنا چاہتے ہیں کہ آخر کار لوگ ان پر یقین کرلیں، یہ حزب اللہ پر کیے جانے والے ظلم کی آخری حد ہے، تحقیقات سے ثابت ہوجائےگا کہ بیروت کی بندرگاہ میں حزب اللہ کا کوئی ہتھیار یا دھماکہ خیز مواد نہیں تھا۔
 

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین