حماس کی دھمکیوں سے صیہونی خوف و ہراس کا شکار

ایک عرب میڈیا آؤٹ لیٹ نے اس خطرناک ترین خطرے کو بے نقاب کیا جو حماس نے ثالثوں کے ذریعے اسرائیل کو بھیجا تھا۔

ولایت پورٹل:لبنانی اخبار الاخبار نے اپنے ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ حماس نے ثالثوں کے ذریعے اسرائیل کو پیغام بھیجا کہ اگر قابض ملک کے اندر اور باہر قتل و غارت کی پالیسی پر عمل درآمد کریں گے تو ان کے شہروں اور اسٹریٹیجک مراکز کو بڑے پیمانے پر نذر آتش کیا جائے گا اور وہ راکٹوں سے ناقابل تصور حملوں سے دوچار ہوں گے۔
تاہم ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیل کے لیے سب سے خطرناک خطرہ حماس کی جانب سے یہ اعلان تھا کہ وہ فلسطین کے اندر اور باہر اسرائیلی قتل و غارت گری کی پالیسی کے جواب میں مقبوضہ فلسطینی شہروں کے اندر دھماکہ خیز بیلٹ کے ساتھ شہادت طلبانہ کارروائیاں کریں گے، حماس ان دو دھمکیوں پر نہیں رکی بلکہ ثالثوں کے ذریعہ مذاکرات میں انہیں یقین دلایا کہ اگلی جنگ اب صرف غزہ کے ساتھ جنگ نہیں رہے گی بلکہ ایک علاقائی جنگ ہوگی جو قابض حکومت کے خلاف کئی محاذوں پر ہو گی، اور فلسطینی تحریکوں کی کاروئیوں کا مرکز مغربی کنارہ اور 1948 کے علاقے ہوں گے جس سے صیہونیوں پر خوف و ہراس طاری ہوگیا اور ان کی نیندیں حرام ہو گئی۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین