Code : 2604 40 Hit

اقوام متحدہ اور آل سعود کینسر کے شکار یمنی بچوں کے قاتل

یمنی بچوں کے کینسر کےشعبہ کے سربراہ کا کہنا ہے کہ سعودی اتحاد کی جانب سے جاری یمن کی ناکہ بندی اور ملک میں کیمیکلز دواؤں کی کمی کی وجہ سے کینسر میں مبتلا بچوں کی اموات میں اضافہ ہورہا ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق یمن میں قومی کینسر سنٹر میں چلڈرن کینسر ڈویژن کے سربراہ حمود ہدیش نے یمن میں کینسر کے شکار بچوں کی اموات کی بڑھتی ہوئی شرح کا حوالہ دیتے ہوئے اس صورتحال کا ذمہ دار اقوام متحدہ کو قرار دیا،انھوں نے مزید کہاکہ ہمارے ہسپتالوں  میں کینسر کے پرانے اور نئے مریضوں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے،یمنی طبی عہدیدار کے مطابق ، کچھ مریضوں کی ہسپتال میں داخل ہونے اور علاج شروع ہونے سے قبل ہی موت ہو جاتی ہے کیونکہ یمنی خاندانوں کے ذریعہ سعودی اتحاد کی  جانب سے جاری محاصرہ  یمنی عوام کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑرہا ہے،یمن میں بچوں کے سرطان کے محکمہ کے سربراہ نے کہا  کہ بہت سے خاندانوں کوادویات تک رسائی حاصل کرنے میں دشواری پیش آتی ہے جو ہمارے پاس نہیں ہے اور ان کو خریدنے کے لئے بجٹ بھی نہیں ہے،ہدیش نے واضاحت کی کہ "عالمی برادری کو یمن کے مریضوں اور ان کے اہل خانہ کی پریشانیوں اور طبی مراکز کو درپیش مسائل کو سمجھنا چاہئے ، ورنہ یہاں انسانی بحران آنے والا ہے،قابل ذکر ہے کہ اس سال کی یونیسیف کی رپورٹ کے مطابق ، روزانہ 300 یمنی بچے کینسر سمیت مختلف بیماریوں کی وجہ سے موت کے منھ میں چلے جاتے ہیں،واضح رہے کہ حالیہ برسوں میں ، یمنی قوم کے خلاف سعودی جنگ میں کینسر کے مریضوں  کی تعداد میں حیرت انگیز اضافہ دیکھنے میں آیا ہے،یمن کے وزیر صحت نے حال ہی میں اعلان کیا ہے کہ ملک میں کینسر کے ٹیومر کے 40،000 کیس ہیں جن میں 6،000 بچے ہیں،یاد رہے کہ سعودی اتحاد اور اس کے کرائے کےفوجیوں نے اب تک یمنی مریضوں کو بیرون ملک سفر کرنے سے نیز ادویات اور دیگر طبی سامان کو یمن میں داخل ہونے سے روک رکھا ہے۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम