Code : 2619 63 Hit

ہماری بندوقوں کا رخ دشمن کا سینہ ہونا چاہئے؛یمنی سیاستدان کا انصاراللہ کے ساتھ اتحاد کا مطالبہ

یمن کی مستعفی حکومت کے پارلیمنٹ کے ایک رکن نے انصاراللہ تحریک کے ساتھ اتحاد کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری بندوقوں کا رخ دشمنوں کی طرف ہونا چاہئے۔

ولایت پورٹل:عبد ربہ منصور ہادی کی حکومت سے وابستہ پارلیمنٹ  ممبر اور جنوب میں الحراک تحریک سے وابستہ مؤتمر الحوار الوطنی (قومی مکالمہ کانگریس) کے ممبر نے یمن میں انصاراللہ تحریک کے ساتھ یکجہتی کا مطالبہ کیا،علی حسین البجیری نے اپنے ٹویٹر پیج پر حوثی تحریک (انصار اللہ) کو وطن اور اس کے اتحاد کا حامی قرار دیتے ہوئے منصور ہادی کی  حکومت سے مطالبہ کیا کہ  وہ  انصاراللہ کے ساتھ بات چیت کرے،انھوں نے مزید کہا کہ ہمیں اس بات پر متفق ہوجانا چاہئے کہ ہمارے اسلحہ کا مقصد دشمنوں کے سینے ہونا چاہئے اور وہ لوگ جن کی حقیقت یمنی قوم پر واضح ہوچکی ہے،یمن سے باہر مقیم البجیری نے کچھ دن پہلے  بھی منصور ہادی کے سرکاری عہدے داروں کو یمن کی تازہ صورتحال پر خاموشی پر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا  کہ انہیں اپنی زمین کی فروخت اور اس کی خودمختاری  کو دوسروں کے ہاتھ میں دینے کی قیمت ملی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ یمن کی موجودہ صورتحال کے خلاف خاموشی ناقابل برداشت ہوچکی ہے،یمن کی الخبر نیوز ایب سائٹ نے بھی لکھا ہے کہ البجیری منصور ہادی  حکومت کے اکیلے عہدہ دار نہیں ہیں جنہوں نے الحوثی  تحریک کےتئیں  منصفانہ انداز میں فیصلہ کیا ہے،بلکہ ملک میں بہت سارے سیاسی اور فوجی ایسے عہدہ دار موجود ہیں کہ جب یمن کے ٹکڑے کرنے اور اس کو ختم کرنے کے سلسلہ میں سعودی اتحاد کی سازش منظر عام پر آئی تو وہ صنعا کے ساتھ ملحق ہوگئے اور اب سعودی اتحاد کے خلاف لڑرہے ہیں،قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے پانچ سال پہلے غریب عرب ملک یمن کو اپنی جارحیت کا نشانہ بنایا تھا جہاں سعودی عرب کا انداز  اب جارحانہ نہیں بلکہ دفاعی رہ گیا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین