عراق کے باسمائے فوجی اڈے سے امریکی فوج کا انخلاء

نام نہاد امریکی انسداد داعش اتحاد نے ہفتے کے روز سرکاری طور پر عراق کے باسمائے فوجی فوجی اڈے کو خالی کر دیا۔

ولایت پورٹل:عراقی سرکاری نیوز ایجنسی (ڈبلیو اے اے) کے مطابق  نام نہاد داعش مخالف امریکی اتحاد نے ہفتے کے روز باسمائے فوجی اڈے کو باضابطہ طور پر خالی کردیا، رپورٹ کے مطابق ، امریکی اتحادی مشترکہ مشن کے کمانڈر ، جبرالڈ اسٹرک لینڈ نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی کہا تھا کہ بسمائے اڈہ خالی کیا جارہا ہے۔
واضح ہے  کہ گذشتہ رات بسمائے اڈے پر 4 راکٹ فائر کیے جانے کے بعد فوجی اڈے کا انخلا ہوا، انہوں نے کہا کہ عراقی حکومت کے ساتھ ضروری ہم آہنگی کے ساتھ عراق سے امریکی فوجیوں کی تعداد بتدریج کم کی جائے گی،یادرہے کہ بغداد کے قریب بسمائے اڈہ سے امریکی دہشت گردوں کے انخلا کا اعلان ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب عراقی پارلیمنٹ کے مطابق ، تمام امریکی دہشت گردوں کو ملک چھوڑنا ہوگا۔
عراق میں موجود امریکی دہشتگردوں کے ہاتھوں سپاہ پاسداران کی قدس وننگ کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور الحشد الشعبی کے نایب سربراہ ابو مہدی المہندس  کی شہادت کے بعد عراقی پارلیمنٹ میں ایک بل پاس کیا تھا جس کے تحت اس ملک سے تمام غیر ملکی قابض فوجوں کو باہر نکلنا ہوگا،اس مسودے کے پاس ہونے کے بعد امریکہ  سر توڑ کوشش کررہا ہے کہ پارلیمنٹ کے فیصلہ پر عمل درآمد کو روکا جاسکے اس کے لیے وہ کبھی عراق میں مظاہرے کرواتا ہے اور ان میں آڑ میں اپنے کارندوں کے ہاتھوں عوام پر فائرنگ کروتا ہے تو کبھی مذہبی منافرت پھیلاتا ہےنیز کبھی الحشد الشعبی کے ٹھکانوں پر حملہ کرتا ہے اس لیے کہ یہ تنظیم اس  کی سب سے زیادہ مخالف ہے  جس کی وجہ سے وہ اس کی آنکھ میں کانٹے کی طرح چبھتی ہے اور اس کے خاتمہ کی ناکام کوشش میں لگا ہوا ہے تاہم عراقی عوام اس کی ایک نہیں چلنے دیتے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین