Code : 2359 55 Hit

البغدای کی ہلاکت کے بارے میں ٹرمپ کو اتنی تفصیلات کہاں سے معلوم ہوئی ہیں؛ پینٹاگن کا سوالیہ نشان

پینٹاگن کی جانب سے داعش کے سربراہ ابو بکر البغدای کی موت سے متعلق امریکی صدر کے بیان پر سوالیہ نشان لگاتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس بیان پر امریکی وازت داخلہ کے اعلی عہدہ دارن بھی حیران ہیں۔

ولایت پورٹل:ہل نیوز ایجنسی  نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ پیٹاگن کے ایک اعلی عہدہ دار کا کہنا ہے کہ  ہمیں نہیں معلوم ٹرمپ صاحب کو البغدادی کے مارے جانے کے بارے میں یہ تفصیلات کہاں سے ملی ہیں،یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایتوار کو ایک پریس کانفرانس میں کہا تھا کہ ابو بکر البغدادی کتے کی موت مرا ہے، وہ ایک بزدل کی طرح مرا ہے ،مرتے وقت گڑگڑا رہا تھا،رو رہا تھا اور التماس کر رہا تھا،ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ الغدادی نے اپنی خود کش جیکٹ اڑا کر اپنے آپ کو اور اپنے تین بیٹوں کو ہلاک کیا ہے  اس لیے کہ وہ جس سرنگ میں چھپا ہوا تھا وہ خود کش حملہ کے نتیجہ میں بیٹھ گئی  جس کی وجہ سے وہ اور اس کے بچے ہلاک ہوگئے،امریکی مسلح افواج کے سربراہ مارک میلی نے پریس کانفرانس کے دوران کہا کہ  میرا خیال ہے کہ ٹرمپ کو  اتنی تفصیلات کاروائی کرنے والی فوجی ٹیم سے ملی ہوں  اس لیے کہ وہ اس ٹیم سے براہ راست بات کرنے کی کوشش کررہے تھے لیکن مجھے نہیں معلوم کہ ان کی بات ہوئی یا نہیں ،میلی سے جب  ایک نامہ نگار نے پوچھا  کہ کیا  البغدادی مرتے وقت رو رہا تھا ؟ تو اس کے جواب میں انھوں نے کہا  :مجھے اس کے بارے میں کچھ نہیں معلوم ،یاد رہے کہ اس سے پہلے امریکی وزیر دفاع نے بھی کہا تھا کہ ٹرمپ ابغدادی کے مارے جانے کے بارے میں جو تفصیلات بیان کررہے ہیں ان کے سلسلہ میں وزارت  داخلہ کو کوئی اطلاع نہیں ہے ، اس طرح پینٹاگن کے یہ دوسرے عہدہ دار  ہیں جنہوں نے ٹرمپ کی باتوں پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम