Code : 2755 115 Hit

امریکہ کے جواب میں تاخیر کس بات کی:محمد علی الحوثی

یمن کی سپریم انقلابی کمیٹی کے سربراہ نے قاسم سلیمانی کی شہادت کے بعد امریکہ کے بارے میں ایران کے فوری ردعمل کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس جواب میں تاخیر کرنا ایران کے مفاد میں نہیں ہے۔

ولایت پورٹل: یمن کی سپریم انقلابی کمیٹی کے سربراہ محمد علی الحوثی نے حالیہ امریکی کارروائی پر ردعمل میں تاخیر سے خبردار کیا ہے،محمد علی الحوثی نے ٹویٹر پر لکھا: ایران کے پاس امریکہ کو دندان شکن جواب دینے کی صلاحیت ہے لیکن اس جواب میں تاخیر کرنا ایران کے مفاد میں نہیں ہے اور نہ ہی اس صبر وتحمل سے ایران کو کوئی فائدہ ہوگا،انھوں نے مزید کہا کہ جو شخص ترجیحات کو سمجھتا ہے وہ زبانی جنگ سے ہٹ کر جلدی اور ذمہ داری کے ساتھ آگے بڑھنے کی اہمیت کو جانتا ہے،الحوثی نے مزید کہا کہ کمزور انسان امن قائم نہیں کرسکتا اورنہ ہی کانپتے ہوئے ہاتھ کامیابی لاسکتے ہیں،یادرہے کہ الحوثی نے اس سے قبل ایران کی قدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی اور الحشد الشعبی کے نائب  کمانڈر ابو محمد المہندس شہادت پر ایران اور عراق کی عوام کوتعزیت  پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ دہشتگردانہ اقدام قابل مذمت ہے اور فوری طور پر اس کا جواب دینا چاہیے،یہی اس دہشتگردی کو روکنے کا واحد حل ہے،واضح رہے کہ امریکہ نے 3 جنوری کو صبح سویرے بغداد ائرپورٹ کے نزدیک ایک ڈورن حملہ کر کے قدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی اور الحشد الشعبی کے  نائب کمانڈر ابو محمد المہندس شہید کردیا،شہید قاسم سلیمانی کی کل عراق کے کئی شہروں میں بے مثال تشییع جنازہ ہوئی اور آج صبح ان کا جنازہ ایران لایا گیا ہے  جہاں تہران ،مشہد ،اہواز اور قم میں تشییع کرنے کے بعد ان کے آبائی وطن کرمان میں سپرد خاک کیا جائے گا۔




0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین