مغربی ممالک شامی مہاجرین کی وطن واپسی میں رکاوٹ ہیں: لبنانی وزیر خارجہ

لبنانی وزیر خارجہ نے شامی پناہ گزینوں کی اپنے ملک میں واپسی کو مغرب کی طرف سے سبوتاژ کرنے کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ مغربی ممالک شامی مہاجرین کی ان کے ملک میں واپسی کو روک رہے ہیں۔

ولایت پورٹل:العہدنیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق لبنانی وزیر خارجہ عبداللہ بو حبیب نے شامی پناہ گزینوں کے اپنے ملک واپسی کے راستے میں مغربی ممالک کی تخریب کاری کے بارے میں بات کی، رپورٹ کے مطابق لبنان کے وزیر خارجہ نے اس سلسلے میں کہاکہ مغربی ممالک شامی مہاجرین کی وطن واپسی کو روک رہے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ یہ ممالک نہ صرف بے گھر افراد کی واپسی کی حمایت نہیں کرتے بلکہ انہوں نے بے گھر افراد کو اپنے وطن واپس جانے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی ہے، بوحبیب نے کہاکہ جو بات واضح نظر آتی ہے وہ یہ ہے کہ مغربی ممالک دمشق حکومت کے بارے میں اپنے موقف کی وجہ سے پناہ گزینوں کی وطن واپسی کو روک رہے ہیں۔
انھوں نے مزید کہا کہ ہم نے گزشتہ عرصے میں شامی پناہ گزینوں کی ان کے ملک میں واپسی کے لیے روسی تعاون کا مشاہدہ کیا ہے، یادرہے کہ  حال ہی میں شام کے وزیر خارجہ  نےبھی دمشق کے بارے میں مغربی ممالک کے معاندانہ رویے پر کڑی تنقید کی،لبنانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم نے روس کے ساتھ مل کر شامی پناہ گزینوں کی ان کی سرزمین پر واپسی کی تیاری کے لیے سخت محنت کی ہے۔
 المقداد نے کہاکہ تمام کوششوں کے باوجود مغربی ممالک جھوٹ اور جھوٹے پروپیگنڈے کے ذریعے شامی پناہ گزینوں کی واپسی کو روکنے کی کوشش کر رہے ہیں، انھوں نے مزید کہاکہ شام کے پناہ گزینوں کی ان کے ملک میں واپسی کے معاملے کو اب بھی شدید سیاسی کام اور مغربی ممالک کے شدید دباؤ کا سامنا ہے۔
 انہوں نے مزید کہاکہ مغربی دباؤ کا مقصد شام میں زیادہ تر پناہ گزینوں کی واپسی کو سبوتاژ کرنا ہے جبکہ وہ سیاسی مطالبات کی تکمیل کے خواہاں ہیں جو اقوام متحدہ کے چارٹر سے متصادم ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین