Code : 3195 309 Hit

ہم ایران کے خلاف جنگ تو دور کی بات، اس ملک میں عدم استحکام ایجاد کرنے میں بھی ناکام ہوچکے ہیں:امریکی سنیٹر

امریکی سینیٹ کے ایک سینئر ممبر کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کو تسلیم کرلینا چاہئے کہ وہ ایران میں عدم استحکام ایجاد کرنے میں بھی ناکام رہے ہیں ۔

ولایت پورٹل:سعوددی چینل  العربیہ نے ٹرمپ انتظامیہ کے ایک اہلکار کے حوالے سے کہا ہے کہ امریکہ ایران کے خلاف جنگ کے بجائے عدم استحکام کا خواہاں ہے۔
العربیہ نے "واشنگٹن:" کے عنوان سے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ ہم ایران کے ساتھ جنگ کا خواہاں نہیں ہیں  لیکن ہم اس ملک میں فیصلہ کن  عدم استحکام چاہتے ہیں۔
سعودی اخبار نے ایک امریکی سرکاری عہدہ دار جس نے نام ظاہر نہیں کیا ہے ،کے حوالے سے لکھا ایران امریکی سلامتی کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہے۔
مذکورہ اخبار نے اسی جملہ کو دلیل بناتے ہوئے لکھا ہےکہ شاید ٹرمپ حکومت کے ایران کے بارے میں  نظریہ کو واضح کرنے کے لئے یہی اعلان کافی ہے۔
العربیہ کا کہنا ہے کہ واشنگٹن تہران کو نہ صرف ان کے ہمسایہ ممالک بلکہ مشرق وسطی میں امریکی شہریوں اور فوجیوں سمیت امریکی قومی سلامتی کے لئے بھی خطرہ سمجھتا ہے۔
امریکہ اس خطرے کا مقابلہ کرنے کے لئے مستقل طور پرکوشش کر رہا ہے ،ان کوششوں میں سے ایک مشرق وسطی میں بڑی تعداد میں فوجیوں کی تعیناتی ہے۔
واضح رہے کہ خطہ میں امریکہ کے 90ہزار بری اور بحری فوجی تعینات ہیں۔
امریکی انتظامیہ کےمذکورہ گمنام عہدیدار نے العربیہ کو بتایا کہ ہم واضح طور پر دیکھتے ہیں کہ امریکہ ایران کے خلاف  فوجی اور معاشی طورپر بہترین رکاوٹ ہے۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم ایران کے خلاف فوجی طاقت کو استعمال کرنے کی کوشش نہیں کررہے ہیں۔
یہ وہی بات سے جس کو امریکی صدر متعدد بار دہرا چکے ہیں۔
العربیہ نے مذکورہ عہدیدار کے حوالے سے مزید لکھا ہے کہ خطے میں امریکی افواج کی تعیناتی محض ایک مضحکہ خیز مظاہرہ نہیں ہے بلکہ امریکی حکومت کے اس منصوبے کا ایک حصہ ہے جس کے تحت وہ ایران پر سفارتی  اور معاشی پابندیاں عائد کرتی ہے تاکہ اس کو اپنے طرز عمل کو تبدیل کرنے کے لئے دباؤ ڈالے۔
 


1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین