ہمیں 100 ٹریلین ڈالر کا بجٹ خسارہ ہے؛ اقوام متحدہ کااعلان

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اسے متعدد عالمی چیلنجوں سے نمٹنے کے عمل میں 100 ٹریلین ڈالر کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا ہے جن میں موسمیاتی تبدیلی ، سماجی عدم مساوات اور عالمی غربت جیسے چیلنج شامل ہیں۔

ولایت پورٹل:گزشتہ روز جاری کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق  اقوام متحدہ کو غربت ، سماجی عدم مساوات ، ناانصافی اور موسمیاتی تبدیلی کے چیلنجز سے نمٹنے کے اپنے اہداف کو پورا کرنے کے لیے 100 ٹریلین ڈالر کے بجٹ خسارے کا سامنا ہےجنہیں ایک   محدود وقت میں پورا کرنا ممکن نہیں  جب تک 2030 تک دنیا کی اقتصادی پیداوار کا 10 فیصد براہ راست اور سالانہ اقوام متحدہ کے ان اہداف کے لیے مخصوص نہ کیا جائے۔
واضح رہے کہ  اقوام متحدہ کے پائیدار ترقیاتی اہداف مختلف مسائل کو حل کرتے ہیں بشمول ماحولیات ، صحت ، سماجی انصاف اور موسمیاتی تبدیلی  نیز وہ اس سلسلے میں اہداف مقرر کرتے ہیں، اقوام متحدہ کے تعاون سے دی فورس فار گڈ کی ایک رپورٹ کے مطابق ، اقوام متحدہ کے تمام اراکین نے ان اہداف کے حصول کی حمایت کی ہے ،تاہم  ان مقاصد کے حصول کے لیے حکومتوں ، سرمایہ کاروں ، بینکوں اور کمپنیوں کی جانب سے فنڈز کی مستقل کمی ہے۔
 دریں اثنا  کورونا وبا نے فنڈنگ کے عمل میں خلل ڈالا ہے ، نئے اعداد و شمار کے مطابق  بجٹ کے نئے خسارے سالانہ 10 کھرب ڈالر سے زیادہ ہو گئے ہیں۔ نیویارک میں سیکرٹری جنرل کے دفتر میں تجارت اور ترقی سے متعلق اقوام متحدہ کی کانفرنس کے صدر چنتل لائن کارپینٹر نے کہا کہ اس وقت انسان ایک نازک موڑ پر ہیں۔
انھوں نے کہا کہ تمام ممالک اور اداروں کو مل کر سب کے لیے پائیدار ترقی اور خوشحالی کے اہداف کے حصول کے لیے کام کرنا چاہیے،اقوام متحدہ کے پائیدار ترقیاتی اہداف جنگ ، بھوک ، صنفی عدم مساوات اور موسمیاتی تبدیلی جیسے چیلنجوں سے نمٹتے ہیں جن کے لیے عالمی کاروائی کی ضرورت ہوتی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین