ہم جنگ کے خواہاں نہیں ہیں، پھر بھی کسی کو شوق ہے تو ہماری تاریخ پر نظر ڈال لے:ایران

ایران کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ ہم تناؤ اور جنگ کے خواہاں نہیں ہیں لیکن پھر بھی اگر کوئی ایران پر حملہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے تو اسے گذشتہ جارحیتوں کی تاریخ پر غور کرنا چاہئے۔

ولایت پورٹل:اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج (پیر) ایرانی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے اجلاس کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے ٹرمپ انتظامیہ کے آخری ایام میں کیے جانے والے اقدامات کے بارے میں کہاکہ اسلامی جمہوریہ ایران نہ تو تناؤ اور نہ ہی جنگ کا خواہاں ہے اور امریکہ کے اندر رسوا ہونے والی ٹرمپ انتظامیہ کے حالیہ اقدامات سےایرانی عوام کے ارادوں پر کوئی اثر نہیں پڑنے والا ہے، انہوں نے مزید کہاکہ اگر کوئی ایران پر حملہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے تو اسےہم پر ہو نے والی پچھلی جارحیتوں کی تاریخ پر غور کرنا چاہئے ، میں سمجھتا ہوں کہ ٹرمپ انتظامیہ کے باقی ایک یا دو دن میں ختم ہو جائے گی جبکہ  اور اسلامی جمہوریہ نہایت ہی اچھے طریقے سے اپنی راہ پر گامزن ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ نے سردار قاسم سلیمانی کی شہادت کے معاملے کی پیروی کا  ذکر کرتے ہوئے کہا کہ میں نے وزارت خارجہ کے بین الاقوامی اور دو طرفہ سطح پر اس سلسلے میں کی جانے والی کارروائیوں اور ایران اور عراق کے اندر قانونی پیروی اور بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ مل کر کام کرنے کی اطلاع دے دی ہے، انہوں نے پابندیاں ختم کرنے کے لئے اسٹریٹجک اقدام سے متعلق قانون کے نفاذ کے بارے میں بھی کہاکہ  وزارت خارجہ اپنے تجزیے سے قطع نظر  ملک کے قانون کو نافذ کرے گی، ہم سمجھتے ہیں کہ یہ جمہوریت کی اساس ہے  اور حکومت کو یقین ہے کہ پارلیمانی قانون کو نافذ کرنا چاہئے۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین