Code : 2171 40 Hit

ہم جنگ نہیں چاہتے لیکن دفاع میں پل بھر نہیں لگائیں گے:ایران

ایران کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ ہم کسی بھی عسکری تنازع میں نہیں الجھنا چاہتے لیکن اگر امریکا یا سعودی عرب کی جانب سے کوئی بھی حملہ کیا گیا تو یہ جنگ کی دعوت ہوگی۔

ولایت پورٹل:اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیرخارجہ جواد ظریف نے کہا کہ ایران کسی بھی عسکری تنازع میں نہیں الجھنا چاہتا تاہم اگر امریکا یا سعودی عرب کی جانب سے کوئی بھی حملہ کیا گیا تو یہ جنگ کی دعوت ہوگی اور ہم اپنے دفاع میں ایک پل بھی دیر نہیں کریں گے،محمدجواد ظریف کا کہنا تھا کہ امریکا اور اس کے اتحادیوں کے سعودی آئل فیلڈ پر حملے کے ایران پر الزامات امریکی صدر کو ایک جنگ کی طرف مائل کرنے کی کوشش ہوسکتی ہے،  لیکن ہم اس معاملے میں انتہائی سنجیدہ ہیں اور جنگ نہیں چاہتے، تاہم یہ بھی باور کرانا چاہتے ہیں کہ جنگ کی صورت میں سعودی عرب کوآخری ’امریکی فوجی‘ کے زندہ ہونے تک لڑنا پڑے گا،واضح رہے کہ 14 ستمبر کو سعودی شہر بقیق میں بڑی آئل فیلڈ اور آرامکو کمپنی کے پلانٹ پر یمنی سرکاری فوج نے ڈرون حملے کئے تھے جس کے نتیجے میں بھاری مالی نقصان ہوا تھا، امریکا اورسعودی عرب نے ان حملوں کا الزام ایران پر عائد کیا تھا جبکہ اسلامی جمہوریہ ایران نے تمام ترالزامات کو مسترد کردیا تھا،دوسری طرف یمنی سرکاری فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ سعودی تیل تنصیبات پر حملے یمن نے ہی کئے اور اس قسم کے مزید حملے ہوں گے، انہوں نے کہا تھا کہ جب تک یمن کے خلاف جارحیت کا خاتمہ نہیں کیا جاتا تب تک سعودی عرب کے خلاف جوابی کارروائی کا سلسلہ بھی جاری رہے گا۔
تسنیم


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम