Code : 3456 17 Hit

ہم شام میں تیل کی حفاظت کررہے ہیں؛ٹرمپ کی عوام فریبی

امریکی صدر نے اس جھوٹے دعوے کے اعادہ کے باوجود کہ وہ مشرق وسطی میں اپنی فوجی موجودگی کو کم کرنا چاہتےہیں ، دعوی کیا کہ شام میں امریکی فوجیوں کی مسلسل تعیناتی صرف اور صرف اس ملک کے تیل کی حفاظت کے لئے ہے۔

ولایت پورٹل:وائٹ ہاؤس کی ویب سائٹ کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جو اس وقت 2020 کی انتخابی مہم کو آگے بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں اور اس دوران امریکی فوجیوں کو وطن واپس لانے کے ایک پرانے نعرے کو اچھال رہے ہیں ، اسی سلسلہ میں جب ان سے سوال کیا گیا کہ امریکی فوجیں صحرائے سینا سے کیوں پیچھے ہٹ رہی ہیں؟تو اس کے جواب میں انھوں نے یہ دعویٰ کیا کہ ہم نے مختلف علاقوں سے اپنی فوج کی ایک بڑی تعداد واپس بلا لی ہے۔
انھوں نے اپنے دعوے کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ "آپ جانتے ہیں کہ  ہم کئی سالوں سے شام اور ترکی کی سرحد کی حفاظت کر رہے ہیں  اور وہاں ہماری ہزاروں فوجیں موجود ہیں۔
لیکن میں نے کہا  کہ ایک منٹ رکیے میں  آپ سے ایک سوال پوچھتا ہوں  کہ  ترکی اور شام دو بڑے ممالک ہیں اور وہ اپنی سرحدوں کی حفاظت کرنا جانتے ہیں، وہ برسوں سے ایک دوسرے سے لڑ رہے ہیں،ہمیں وہاں ہزاروں فوج رکھنے کی ضرورت کیوں ہے؟
آخر کار ہم نے اپنی فوج کی تعداد 57 اور پھر 27 کردیاور جب دونوں ممالک کے مابین تناؤ بڑھتا گیا تو ہم نے ان 27 کو (ترکی شام کی سرحد سے) ہٹا دیا۔
ٹرمپ نے اپنی لن ترانیاں جاری رکھتے ہوئے مزید کہاکہ ہم بنیادی طور پر شام چھوڑ چکے ہیں ،اب ہمارے جنتے فوجی بھی شام میں ہیں وہ اس ملک کے تیل کی حفاظت کررہے ہیں۔
واضح رہے کہ ایک طرف ٹرمپ مشرق وسطی کے تنازعات میں حصہ نہ  لینے کے کی بات کررہے ہیں اور دوسری طرف  انھوں نے ہی گذشتہ روز ایران کے خلاف جنگی اقدامات کو کم کرنے کے لئے کانگریس کی قرارداد کو ویٹو کیا ہے۔
 
 
 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम