ہم یمن میں متحدہ عرب امارات سے نہیں، اسرائیل سے لڑ رہے ہیں:انصاراللہ

یمن کی ایک ویب سائٹ نے متحدہ عرب امارات اور صیہونی حکومت کے اتحاد نیز یمن میں ان کے مشترکہ اہداف کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ اسرائیل متحدہ عرب امارات کی آڑ میں یمن پر جارحیت کر رہا ہے۔

ولایت پورٹل:یمن کی موجودہ جنگ جو کہ تقریباً سات سال سے جاری ہے، کے دوران یمن کے اسٹریٹیجک علاقوں میں متحدہ عرب امارات کے پیچھے صیہونی حکومت کی موجودگی اور کردار کے بارے میں متعدد اطلاعات موصول ہوئی ہیں اور اس موجودگی نیز کردار کے بارے میں خبردار کیا گیا ہے جبکہ متحدہ عرب امارات یمن کے اسٹریٹیجک علاقوں میں فلسطین پر قبضہ کرنے کے لیے صیہونی حکومت کے طریقوں اور حکمت عملیوں پر عمل پیرا ہے اور باقاعدہ طور پر تل ابیب کے نقش قدم پر چل رہا ہے۔
 یمن کی انصار اللہ نیوز سائٹ نے اس موضوع پر ایک رپورٹ شائع کی ہے  جس میں عبدالرحمن مراد نے لکھا ہے کہ متحدہ عرب امارات اور صیہونی حکومت ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں اور ان دونوں  کا ایک ہی مقصد ہے یادوسرے لفظوں میں یہ ایک ہی حکومت اور ادارہ  ہے، تاہم تل ابیب نقاب کے پیچھے ہے۔
انھوں نے مزید لکھا ہے اسرائیل خطے  میں ایک عرب ملک کے معاملات پر کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے،مراد نے مزید لکھا ہے کہ ہم یمن میں اسرائیل کے ساتھ لڑ رہے ہیں ، تاہم اسرائیل  متحدہ عرب امارات کی دیواروں کے پیچھےسے ہم سے لڑ رہا ہے جو ایک حقیقت ہے۔
انھوں نے کہا کہ یمنی عوام کی طرف سے دہرایا جانے والا نعرہ اس بات کا واضح اشارہ ہے کہ وہ وجودی جدوجہد کی بنیادی نوعیت سے آگاہ ہیں،ایک دن یہ بات واضح ہو جائے گی،اگرچہ حقیقت واضح ہے،تاہم  بہت سے لوگ اب بھی اسے سمجھنا نہیں چاہتے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین