Code : 3073 12 Hit

ممالک کورونا کا مقابلہ کرنے کے لئے چین کے ماڈل کا استعمال کریں: عالمی ادارہ صحت کے ماہر

چین سے واپس آنے کے بعد عالمی ادارہ صحت کے ماہر نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے اس ملک کی کوششوں کو قابل تعریف قرار دیا۔

ولایت پورٹل:عالمی ادارہ صحت کے ماہر بروس آئلورڈ نےمذکورہ  وائرس کے خلاف چین کی بھر پور لڑائی کی تعریف کرتے ہوئے دوسرے ممالک سے اپیل کی ہے  کہ وہ اس وباء پر قابو پانے کے ل یے چین کے طرز عمل کو اپنے لیے نمونۂ عمل قرار دیں۔
وباء کے مرکز چین کے ووہان شہر سے واپسی پر بروس آئلورڈ نے کہا کہ اس ملک کے تمام نچلی سطح کے عہدیداروں سے لے کر اعلی سرکاری عہدیداروں تک  شہریوں کے ساتھ تعاون قابل ستائش ہے۔
عالمی ادارہ صحت کے ماہر کے ماہر کا کہنا ہے  کہ اگر وہ  اس وائرس سے متاثر ہوتے ہیں تو وہ چین میں ہی علاج کروائیں گے۔
انہوں نے وائرس کا شکار دوسرے ممالک سے چینی حکومت کی کارروائیوں کو نمونۂ عمل قرار دینے کی اپیل کی۔
آئلورڈ نے کہا کہ  ووہان کوئی گاؤں نہیں  بلکہ ایک ماڈرن شہر ہے جس کی آبادی 15ملین ہے۔
انھوں نے کہا کہ اس شہر کے رہائشیوں نے حکام کے ساتھ تعاون کیا جس کی بنا پر وہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ پر قابو پانے میں بہت کامیاب رہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ وبا کے شروع ہونے کے ساتھ ہی ماہرین پر مشتمل 40000 افراد ووہان پہنچ گئے  جن میں سے بہت سے رضاکار ڈاکٹر تھے۔
آئلورڈ نے کہا کہ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ چین کے آمرانہ سیاسی نظام نے ہر شخص کو بیماریوں پر قابو پانے کے حکومتی پروگرام کی تعمیل کرنے کے لیے مجبور کیا جبکہ  ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔
آئلورڈ نے چینی باشندوں سےخطاب کرتے ہوئے کہ دنیا آپ کی مقروض ہے۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम