Code : 2823 15 Hit

علاقے میں کشیدگی کی وجہ سے یوکرائنی طیارہ حادثہ کا شکار ہوا ہے: کینیڈین وزیر اعظم

کینیڈا کے وزیر اعظم نے کہا کہ ایران میں یوکرائنی طیارے کے حادثے کی سب سے بڑی وجہ امریکہ اور ایرانی کشیدگی ہے جس کا سبب امریکہ کے ہاتھوں ایران کی قدس فورس کے کمانڈر کو قتل کرنا تھا۔

ولایت پورٹل:گلوبل نیشنل چینل کو دینے والے اپنے ایک انٹرویو میں کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے ایران کے ساتھ حالیہ امریکی کشیدگی کو یوکرائنی طیارہ گرنے اور کینیڈا کے شہریوں کی ہلاکت کا سبب قرار دیاہے،انھوں نے مزید کہا کہ اگر امریکہ اور ایران کے درمیان کوئی تناؤ نہ ہوتا یا  حال میں اس میں کوئی اضافہ نہیں ہوا ہوتاتو یہ کینیڈاین اس وقت اپنے کنبے کے ساتھ اپنےگھر وں میں  موجود ہوتے،انھوں نے اس پر تنقید کرتے ہوئے کہ امریکہ نے کینیڈا کو سردار قاسم سلیمانی پر قاتلانہ حملہ کرنے کے لیے اعتماد میں نہیں لیا تھا،وضاحت کی یہ (ہوائی جہاز کا حادثہ) ایک ایسی چیز ہے جو تنازعات اور جنگ کے دوران ہوتا  رہتاہے  اسی لئے ہم سب کو چاہیے کہ  کشیدگی کو کم کرنے اور تنازعات نیز مزید ہلاکتوں سے بچنے کے لیےکوشش کریں نیز جنگ اور قتل عام سے ہٹ کر کوئی راستہ تلاش کریں،کینیڈا کے وزیر اعظم نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے حالیہ واقعات کے بارے میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے بات کی ہے اور تناؤ کم  کرنے پر زور دیا ہے،ٹروڈو سے جب سوال کیا گیا  کہ کیا ریاستہائے متحدہ نے سردار سلیمانی کے قتل  اور خطہ میں ینیڈا کے فوجیوں کی جان کو خطرہ  میں ڈالنے سے پہلے ہی انھیں  آگاہ کیا تھا ؟اس کے جواب میں انھوں نے کہا کہ ہمیں کوئی اطلاع یا الرٹ نہیں دیا گیا تھا،انھوں نے مزید کہا کہ ہمیں  بڑے امور پر عالمی برادری کی حیثیت سے کام کرنا چاہیے لیکن بعض اوقات کچھ ممالک اپنے اتحادیوں کو بتائے بغیر کام کرتے ہیں،انھوں نے کہا کہ وہ ترجیح دیتے کہ جنرل سلیمانی کے قتل پر مبنی امریکہ کے غیر عقلی من مانے اقدام سے پہلے انھیں اعتماد میں لیا جاتا۔
 
 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम