Code : 2992 93 Hit

عراق سے امریکی فوجی بھاگنا شروع ہوچکے ہیں: عراقی پارلیمنٹ ممبر

عراقی پارلیمنٹ کے سیکیورٹی اور دفاعی کمیشن کے ایک رکن نے کہا کہ امریکی فوجیوں نے عراق میں اپنے 15 فوجی اڈوں سے فوج کی واپسی شروع کردی ہےاوراب ان کی موجودگی عین الاسد اور اربیل کے ٹھکانوں تک محدود ہوچکی ہے۔

ولایت پورٹل:العہد نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق عراقی پارلیمنٹ کی سلامتی اور دفاع کمیٹی کے ایک رکن علی الغانمی نے عراق میں موجود کچھ اڈوں سے امریکی دہشت گرد فوجیوں کی واپسی کے آغاز کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے ملک سے فوجی انخلاء شروع کر دیا ہے ،اب ان کی موجودگی عین الاسد اور اربیل کے ٹھکانوں تک محدود  ہوچکی ہے۔
یادرہے کہ عین الاسد عراق میں امریکہ کا  سب سے اہم فضائی اڈہ ہے جہاں گذشتہ 18 دسمبر کو اسلامی جمہوریہ ایران نے  امریکہ کے ہاتھوں جنرل قاسم سلیمانی  کی شہادت کا بدلہ لیتے ہوئے میزائلوں کے ذریعہ امریکی فوجیوں کو نشانہ بنایا تھا ۔
تاہم امریکہ نے ابھی اس حملہ میں ہونے والے اپنے جانی اور مالی نقصان کی تفصیلات ظاہر نہیں کی ہیں۔
الغانمی نے اس سلسلہ میں مزید کہا کہ امریکی ان دو اڈوں اربیل اور عین الاسد میں رہنے پر اصرار کررہے ہیں جبکہ عراقی عوام اور پارلیمنٹ نے تمام اڈوں سے انخلا پر زور دیا ہے۔
واضح رہے کہ امریکہ کا یہ اقدام ایسے وقت میں ہورہا ہے جبکہ امریکی محکمہ دفاع نے گذشتہ جمعرات کو یہ دعویٰ کیا تھا کہ وہ عراق چھوڑنے کا ارادہ نہیں رکھتا تھا بلکہ  اس نے مشرق وسطی میں موجود رہنے کا ارادہ کر رکھا ہے۔
ادھر پینٹاگون کے ترجمان نے اس بات پر زور دیا کہ ہم فیلڈ آپریشن دوبارہ شروع کرنے  کی منصوبہ بندی کررہے  ہیں۔
قابل ذکر ہے کہ جنوری کے وسط میں  عراقی پارلیمنٹ میں اکثریت کے ووٹوں کے ساتھ اس ملک سے امریکی فوجی انخلاءکا بل پاس ہوچکا ہے۔

1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین