Code : 2302 135 Hit

امریکہ ترکی پر پابندی لگانے کے لئے تیار،اردغان کو داعش کے ابھرنے کا ذمہ دار ٹہرایا

یاد رہے گذشتہ ہفتہ امریکہ نے شام کے کرد نشین علاقوں سے اپنے فوجیوں کو جیسے ہی واپس بلانے کا اعلان کیا ویسے ہی ترک صدر رجب طیب اردغان نے اس علاقہ پر چڑھائی کردی جس کی پوری دنیا میں مذمت ہورہی ہے کہ جہاں ایک طرف شام کی ارضی سالمیت کے لئے یہ حملات خطرہ ہیں وہیں ان سے بہت سے بے گناہوں کی جان جانے کا بھی خطرہ بن گیا ہے۔

ولایت پورٹل: رپورٹ کے مطابق امریکہ کی وزارت جنگ پیٹانگون نے دعویٰ کیا ہے کہ ترکی کے حملے سے شام میں امریکی اتحاد کمزور اور داعش کو ابھرنے کا موقع مل رہا ہے۔ لہذا امریکہ اپنے نیٹو کے شریک ممالک کے ساتھ مل کر ترکی پر اقتصادی پابندی لگانے کے لئے پوری طرح تیار ہے۔  
امریکی وزیر جنگ مارک ایسپر نے ترکی پر داعش کے خلاف  کثیر القومی مشن کو ،جسے انہوں نے کامیاب بتایا، کمزور کرنے نیز شام کے شمال مشرق سے امریکی فوج کے انخلاء کے اعلان سے  غلط فائدہ اٹھانے کا الزام لگایا۔
امریکی وزیر جنگ نے شام کے کرد علاقہ میں جانی نقصان،مہاجرین کی بڑھتی ہوئی تعداد،تباہی اور امریکی فوج کے لئے بڑھتے خطرات کے واسطے خصوصی طور پر ترکی کو ذمہ دار ٹہرایا اور کہا کہ صدر اردغان داعش کے ابھرنے،احتمالی جنگ کے وقوع پذیر اور انسانی المیہ کے وجود میں آنے کے لئے پوری طرح ذمہ دار ہونگے اور ہم عنقریب اپنے نیٹو کے ساتھیوں سے مل کر ترکی کے خلاف اقتصادی پابندیوں کا اعلان کرنے والے ہیں۔تاہم انہوں نے اقتصادی پابندیوں کی تفصیل کا ذکر نہیں کیا۔
یاد رہے گذشتہ ہفتہ امریکہ نے شام کے کرد نشین علاقوں سے اپنے فوجیوں کو جیسے ہی واپس بلانے کا اعلان کیا ویسے ہی ترک صدر رجب طیب اردغان نے اس علاقہ پر چڑھائی کردی جس کی پوری دنیا میں مذمت ہورہی ہے کہ جہاں ایک طرف شام کی ارضی سالمیت کے لئے یہ حملات خطرہ ہیں وہیں ان سے بہت سے بے گناہوں کی جان جانے کا بھی خطرہ بن گیا ہے۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम