عراقی وزیر اعظم کے استعفی دینے ہونے پر امریکہ کا رد عمل

عراقی وزیر اعظم کے استعفے کے بعد امریکی حکومت کا کہنا ہے کہ عراق کے لیڈروں کو عوام کی شکایات کا ازالہ کرنا چاہئے۔

ولایت پورٹل:امریکی حکومت نے عراقی وزیر اعظم کے استعفے کے بعد کہا ہے کہ ملک کے قائدین کو وہاں کے لوگوں کی شکایات کو دور کرنا چاہئے،عراقی وزیر اعظم عادل عبدالمہدی نے ملک میں تقریبا دو ماہ کے عوامی احتجاج کے بعد جمعہ کو اعلان کیا کہ وہ پارلیمنٹ میں اپنا استعفیٰ پیش کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں،عراق کے عظیم الشأن  مرجع آیت اللہ العظمیٰ سید علی سیستانی کے نمائندہ احمد الصافی نے  کربلا میں جمعہ کے خطبہ  مظاہرین کے خون کو محترم شمار کرتے ہوئے پارلیمنٹ سے اپیل کی کہ وہ ملک کی صورتحال کے پیش نظر عبد المہدی کی حکومت پر نظر ثانی کرے،یاد رہے کہ عراقی کے کئی  صوبوں میں  9 اکتوبر سے ملک کی معاشی اور اقتصادی  صورتحال نیز بعض سیاسی عہدہ داروں کے مالی بدعنوانیوں میں ملوث ہونے کے  خلاف بڑے پیمانے پر احتجاج اور مظاہرے ہوئے ہیں  جن میں کچھ شر پسند عناصر کی جانب سے پر تشدد کاروائیوں کی بنا پر مظاہرین اور سکیورٹی فورسز کے درمیاں کئی جھڑپیں ہوئی ہیں  جن کے نتیجہ میں دونوں طرف سے متعدد افراد جاں بحق اور زخمی ہوئے ہیں ۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین