امریکہ نے وعدہ کیا ہے اگلے 10 دنوں میں ہمارے قیدیوں کو رہا کردے گا: طالبان کے سیاسی مشیر

طالبان کے ایک سینئر مذاکرات کار کا کہنا ہے کہ امریکہ نے وعدہ کیا ہے اگلے 10 دنوں میں ہمارے قیدیوں کو رہا کردے گا۔

ولایت پورٹل:طالبان کے سینئر مذاکرات کار شیر محمد عباس اسٹانکزئی نے طالبان اور امریکہ کے مابین امن معاہدے کو افغان تاریخ کا ایک اہم دن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس معاہدے کے تحت امریکہ اور نیٹو کو اگلے 14 ماہ کے اندر اپنی تمام فوج کو افغانستان سے نکالنا ہوگا۔
اسٹانکزئی  نے مزید کہا کہ افغانستان پر امریکہ اور نیٹو کے حملے اور قبضے کے بعد 20 سال تک جاری رہنے والی جنگ کے بعد آخر کار اسلامی امارت اور امریکہ کے مابین معاہدے  پر دستخط ہوئے ہیں جس کے تحت ان سب کو  14 ماہ کے اندر افغانستان چھوڑنا ہوگا ۔
انھوں نے مزید کہا کہ اس معاہدے پر دستخط ہونے کے 10 دن بعد ، افغانوں کے درمیان بات چیت 10 مارچ کواس صورت میں شروع ہوگی اگر تقریبا5000 طالبان قیدیوں کو افغان جیلوں سے رہا کیا جائے گا ۔
طالبان کے مذکورہ  عہدیدار نے  کہا کہ  افغان حکومت کے  ایک ہزار قیدیوں کو بھی طالبان کی قید سے رہا کیا جائے گا۔
اسٹانکزئی نے اگلے 10 دنوں میں 5000 طالبان زیرحراست افراد کی رہائی کے نفاذ کے کا ذکر کرتے ہوئے  کہا کہ امریکہ نے ایسا کرنے کا وعدہ کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے یہ معاہدہ امریکہ کے ساتھ کیا ہے اور اس کی ساری دفعات معاہدے میں ذکر ہیں  اور یہ امریکیوں کا وعدہ ہے کہ اسے 10 مارچ تک عملی جامہ پہنا دیا جائے گا۔
انہوں نے آنے والے دنوں میں تشدد کے خاتمے کے بارے میں بھی کہاکہ معاہدے کے مطابق یکم مارچ سے طالبان ، حکومت اور امریکہ کے مابین جنگ ختم ہو جائے گی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین