Code : 2968 19 Hit

امریکہ شام اور عراق سے اتنا جلدی جانے والا نہیں: شامی کرد عہدہ دار

شامی ڈیموکریٹک فورسز کے پریس آفس کے سربراہ نے داعش کی باقیات کا مقابلہ کرنے کے بہانے شام اور عراق میں مسلسل امریکی فوج کی موجودگی کے امکان کا اعلان کیا۔

ولایت پورٹل:کرد ویب سائٹ کردستان-24 کی رپورٹ کے مطابق شامی ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) کے پریس آفس کے سربراہ نے منگل کے روز کہا کہ توقع کی جاتی ہے کہ ریاست ہائے متحدہ کے شمال مشرقی شام میں طویل عرصے تک موجود رہیں گے مگر یہ کہ غیر متوقع صورتحال پیش آجائے۔
شامی ڈیموکریٹک فورسز پریس آفس کے سربراہ مصطفیٰ بالی نے کہا کہ  امریکی وزیر دفاع اور امریکی فوج کے ترجمان کےبیان سے ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ  شام اور عراق میں  امریکی فوجی طویل عرصے تک موجود رہیں گے۔
انہوں نے مزید کہا کہ شام جیسے ملک میں غیر متوقع صورتحال پیش  سکتی ہے کیونکہ اس ملک میں بہت ساری بین الاقوامی اور علاقائی قوتیں مداخلت کر رہی ہیں۔
شامی ڈیموکریٹک فورسز پریس آفس کے سربراہ نے مزیدکہا کہ مختلف سطح پر ہونے والی بات چیت کی بنیاد پر کہا جاسکتا ہے کہ  جگ تک شام میں کوئی سیاسی حل نہیں نکلتا امریکی افواج یہاں موجود رہیں گی۔
بالی نے کہا کہ معاہدے کے مطابق  ہماری افواج ، امریکہ اور اتحادی ممالک کے دیگر ممبران داعش کے خلاف جنگ میں شراکت کر رہے ہیں  اور یہ  جنگ ابھی جاری رہے گی۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ اور دیگر اتحادی شراکت دار اس سے بخوبی واقف ہیں اور ہمارے منصوبے اور ہم آہنگی اسی بنیاد پر ہیں۔
ان کا کہنا ہے کہ امریکہ کے بارے میں حالیہ تاثر یہ ہے کہ وہ جانتے ہیں کہ داعش کی فوجی شکست کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ان کی دھمکیاں ختم ہوگئی ہیں۔
شامی عہدیدار نے پہلے بھی کہا تھا کہ اگر ترکی کی طرف سے کوئی فوجی حملہ ہوا تو وسیع پیمانے پر جنگ شروع  ہوجائےگی۔
 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम