اردن کی عوام کا اپنے ملک سے امریکی اور صیہونی سفیروں کو باہر کرنے کا مطالبہ

اردن کے سینکڑوں شہریوں نے امریکی سفارت خانے کے سامنے مظاہرہ کرتے ہوئے امریکی اور صیہونی سفیروں کو ملک بدر کرنے کا مطالبہ کیا۔

ولایت پورٹل:عربی 21 نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق  جمعہ کے روز سینکڑوں اردنی باشندوں نے اس ملک کے دار الحکومت امان میں امریکی سفارت خانے کے سامنے ریلی نکالی جس میں انہوں نے مغربی کنارے کے کچھ حصوں کو مقبوضہ علاقوں کے ساتھ الحاق کرنے کے صیہونی  امریکی منصوبے امریکی کی مخالفت کی۔
درایں اثنا فلسطینیوں کو نشانہ بنانے والے سینچری ڈیل نامی امریکی منصوبے کے خلاف احتجاج کے طور پر اردن کے مختلف حصوں میں بھی انسانی ہمدردی کی زنجیریں تشکیل دی گئیں۔
واضح رہے کہ اردن کے عوام نے اپنے ملک اور امریکہ کے مابین سفارتی تعلقات منقطع کرنے ، اسرائیل اور امریکی سفیروں کو اردن سے بے دخل کرنے ، تل ابیب کے ساتھ امن معاہدے کی منسوخی اور مغربی کنارے کو الحاق کرنے اور صدی ڈیل کے منصوبے کے جواب میں گیس معاہدہ ختم کرنے پر زور دیا۔
تاہم اردن کی سکیورٹی فورسز نے مظاہرین کواس ملک میں قائم امریکی سفارتخانے کی طرف جانے سے روک دیا۔
اردن کے مظاہرین نے کہا ہے کہ وہ الحاق کے منصوبے پر عمل درآمد کے صیہونی حکومت کے فیصلے کی مخالفت جاری رکھیں گے کیونکہ ان کے ملک کا سرکاری موقف صیہونی امریکی منصوبے کی مخالفت پر مبنی ہے۔
واضح رہے کہ اردن کے عہدیداروں نے سینچری ڈیل اور مغربی پٹی کے کچھ حصہ کو مقبوضہ علاقوں میں شامل کیے جانے  کے منصوبے کے خلاف بار بار اپنی مخالفت کا اظہار کیا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین