امریکی کانگریس کا بائیڈن حکومت سے ترکی کو ایف16 طیارے فروخت نہ کرنے کا مطالبہ

امریکی ایوان نمائندگان میں گیارہ ڈیموکریٹس اور ریپبلکن اراکین نے  اس ملک کےصدر اور وزیر خارجہ کو خط لکھ کر ترکی کو F-16 لڑاکا طیاروں کی فروخت بند کرنے پر زور دیا ہے۔

ولایت پورٹل:روئٹرز خبر رساں ادارے  کی رپورٹ کے مطابق امریکی کانگریس کے ارکان نے ڈیموکریٹک اور ریپبلکن دونوں جماعتوں سے مطالبہ کیا کہ وہ امریکی صدر جو بائیڈن کو ترکی کو F-16 لڑاکا طیارے فروخت کرنے سے روکیں،گیارہ امریکی قانون سازوں نے جو بائیڈن اور سکریٹری آف اسٹیٹ انتھونی بلنکن کو حالیہ رپورٹس، جن میں کہا گیا تھا کہ  ہوسکتا ہے ہم ترکی کو 40 نئے F-16 اور پرانے طیاروں کو رینیو کرنے کے لیے80 نئی کٹس فراہم کی جائیں۔
 انہوں نے یہ بھی کہا کہ انہیں یقین ہے کہ کانگریس ایسی برآمدات کو روک دے گی، خط میں کہا گیا ہے کہ ستمبر میں اردگان کے اعلان کے بعد کہ ترکی روسی S-400 میزائل دفاعی نظام کا ایک نیا دور خریدے گا، ہم امریکی ساختہ طیارہ کسی اتحادی کو بھیج کر اپنی قومی سلامتی کی ضمانت نہیں دے سکتے،یادرہے کہ  وائٹ ہاؤس نےابھی تک اس مطالبہ پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔
درایں اثنا امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ وزارت کانگریس کے ساتھ خط و کتابت پر تبصرہ نہیں کرے گی،یادرہے کہ امریکی کانگریس اراکین کی  مخالفت ایسے وقت میں ہورہی ہے جبکہ قبل ازیں ترک وزیر دفاع خلوصی آکار نے اعلان کیا تھا کہ ترکی نے امریکہ سے ایف 16 لڑاکا طیاروں کی خریداری شروع کر دی ہے۔
واضح رہے کہ  اس سے قبل ترک صدر رجب طیب اردگان نے کہا تھا کہ انقرہ جلد ہی امریکی F-35 لڑاکا طیاروں کے لیے ادا کیے گئے 1.4 بلین ڈالر کی واپسی کرے گاجبکہ ترکی نے پہلے بھی کہا ہے کہ اگر امریکہ F-16 کی فروخت بند کر دیتا ہے تو وہ روس سے سوخو-35 اور سوخو-57 لڑاکا طیارے خرید سکتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین