Code : 4069 8 Hit

آل سعود عقیدہ کی بنا پر قید افراد کے ساتھ بدسلوکی کرتے ہیں:اقوام متحدہ کے ماہرین

اقوام متحدہ کے سات ماہرین نے سعودی عرب کو لکھے گئے خط میں قید ی سماجی کارکنوں کے ساتھ بدسلوکی کرنے اور کورونا کے حالات میں ان کی رہائی کی درخواستوں کو نظرانداز کرنے پر سعودی عرب کی تنقید کی۔

ولایت پورٹل:الجزیرہ چینل کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے ماہرین نے سعودی عرب میں قیدسماجی  کارکنوں کے ساتھ بدسلوکی کرنے پر اس ملک کی حکومت  پر تنقید کی ہے، اقوام متحدہ کے خصوصی رپورٹر انیس کاملار سمیت اقوام متحدہ کے سات ماہرین نے سعودی عرب کو ایک خط ارسال کیا کہ وہ جیل میں عبد اللہ الحامد کی موت کی مذمت کرتے ہیں، اقوام متحدہ کے ماہرین کا خیال ہے کہ عبد اللہ الحامد کے ساتھ بدسلوکی اور انھیں تنہائی میں بار بار نظربند کرنا ان کی موت کا سبب ہوسکتا ہے۔

ان ماہرین کا کہنا ہے کہ  ریاض نے کورونا جیسے حالات کے باوجود سیاسی قیدیوں کی رہائی کے لئے ان بار بار درخواستوں پر توجہ نہیں دی ہے،یادرہے کہ عبداللہ الحامد  سعودی شہری جنہوں نے قانون میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی تھی اور سن 2013 سے وہ حراست میں  تھے، حامد سعودی عرب میں سول اینڈ پولیٹیکل رائٹس ایسوسی ایشن کے بانی تھے اور وہ ملک میں اصلاحات اور عصری سعودی تاریخ میں سیاسی قیدیوں کی رہائی کے حامی تھے، دریں اثنا ، یو این ایچ سی آر اور اقوام متحدہ کے ماہرین نے ، کورونا وائرس کے پھیلنے کے بعد سعودی عرب میں عقیدہ کی بناید پر قید کیے جانے والے افرادکی رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔
واضح رہے کہ سعودی عرب میں حکومت کے خلاف اپنی رائے کا اظہار کرنا سنگین جرم شمار کیا جاتا ہے  اور ایسا کرنے پر بغیر کسی عدالتی کاروائی کے برسوں جیل میں گذارنا پڑ سکتے ہیں،حال ہی میں  اس ملک کے ایم ممتاز عالم دین  نے عبداللہ حامد کی موت پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر تعزیت نامہ شائع کیا جس پر انھیں گرفتار کر لیا گیا۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین