Code : 2493 38 Hit

اسرائیل نے دکھاوے کے لیے بھی بین الاقوامی اصولوں کے احترام کرنا چھوڑ دیا

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے صہیونی حکومت کی طرف سے مقبوضہ علاقوں سے ہیومن رائٹس واچ کے ایک اہلکارکو ملک بدر کرنے کی مذمت کی ہے۔

ولایت پورٹل:اناطولیہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کے سربراہ مشیل بچیلیٹ نے جمعہ کے روز صہیونی حکومت کی جانب سے ہیومن رائٹس واچ کے اسرائیلی اور فلسطینی علاقوں کے ڈائریکٹر عمر شاکر کے ورک لائسنس میں توسیع سے انکار کرنے پر مذمت کی ہے،بیچلیٹ کی ترجمان ، مارتھا ہرٹاڈو نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ شاکر  کا ویزہ نہ بڑھا ئے جانے کے تل ابیب کے فیصلے کی کے بعدوہ  6 نومبر کو اسرائیل چھوڑنے پر مجبور ہوگئے،ترجمان نے مزید کہا کہ ہائی کمشنر کو اس فیصلے دلی  افسوس ہے کیونکہ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے دفتر اور اس کے تین خصوصی ایلچیوں نے صیہونی حکومت سے اس  فیصلے کو واپس لینے  کا مطالبہ کیا ہے،اناطولیہ نے لکھا ہے کہ شاکر کو اسرائیل بائکاٹ مہم کی حمایت کرنے  اور اس ریاست پر پابندی لگائے جانے کا مطالبہ کرنے کے جرم میں   برطرف کیا گیا ہے،شاکر نے صیہونیوں کے اس اقدام کوسیاسی مقاصد حاصل کرنے لیے قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کا اصلی ہدف مقبوضہ علاقوں میں انسانی حقوق کے گروپوں کی آواز کو خاموش کرنا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ  اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اسرائیل بنیادی بین الاقوامی اصولوں کے احترام کا دکھاوا  بھی بالکل کھو چکا ہے،شاکر نے اپنےاس  مشن سے قبل دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے امریکی پالیسیوں  اور گوانتانامو کے نظربند افراد پر کام کیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین