Code : 4097 10 Hit

ترکی کی ایک بار پھر شمالی عراق پر بمباری

ترکی نے 24 گھنٹوں سے بھی کم عرصے میں دوسری بار شمالی عراق کواپنے فضائی حملوں کا نشانہ بنایا ہے۔

ولایت پورٹل:بغداد الیوم کی رپورٹ کے مطابق عراقی کردستان کے علاقے میں صوبہ دھوک کے ایک سکیورٹی عہدہ دارنے ہفتے کے روز اعلان کیا تھا کہ ترک طیاروں نے اس صوبے کے متعدد علاقوں پر ایک بار پھر بمباری کی ہے، ترکی کے طیاروں نے صوبہ دھوک کے الاماریہ شہر کے دیہات اور اہم علاقوں پر بمباری کی اور ابھی بھی فضائی حملوں کے ذریعے بٹوفا کے آس پاس کے علاقے کو نشانہ بنایا جارہا ہے، انہوں نے مزید کہاکہ اس فضائی حملے کے نتیجہ میں ہونے والے جانی اور مالی نقصانات کے بارے میں ابھی تک کوئی خبر موصول نہیں ہوئی ہے۔
عراقی کردستان خطے کے ایک سکیورٹی عہدہ دار نے بھی جمعرات کے روز اعلان کیا تھا کہ ترک طیاروں نے ایک بار پھر کردستان کے علاقے کے کچھ حصوں پر بمباری کی  جس کے نتیجہ میں پہاڑی دیہات کے سیکڑوں خاندانوں بے گھر ہوگئے، اس ذرائع نے بتایا کہ ترک طیاروں نے ایک بار پھر عراقی کردستان کے علاقوں کو اپنے فضائی حملوں کا نشانہ بنایا اور صوبہ دہوک کے العمادیہ شہر میں شیلادزی کے پہاڑی دیہات پر بمباری کی۔
کل کے حملے میں بھی کسی جانی نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے  لیکن یہ علاقہ ترک حملوں کا مستقل نشانہ رہا ہے جس کی وجہ سے سیکڑوں خاندان فضائی حملوں کی وجہ سے اپنے گھر بار چھوڑ کر شہر کی طرف چلے گئے ہیں،یادرہے کہ ترکی نے 14 جون سے عقابی پنجہ کے نام سے عراقی کردستان میں بڑے پیمانے پر آپریشن شروع کیا ہے اوردعوی کیا ہے کہ  17 جون سے  شمالی عراق میں آپریشن ٹائیگر کا مقصد  بغداد حکومت کے شدید احتجاج کےباوجود ، کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کے عناصر کو ختم کرنا ہے لیکن عراق کے اعتراض کے باوجوداس ملک کی خودمختاری کی خلاف ورزی کرتے ہوئے انقرہ اپنی کاروائیاں جاری رکھنے پر اصرار کرتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین