امریکہ میں ٹرمپ کے حامیوں کی بغاوت اور تشدد کا خوف؛ کانگریس پولیس ہائی الرٹ

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حامی دائیں بازو کے انتہاپسندگروہوں کی جانب سے ہفتے کے روزمظاہرے کرنے اعلان کے بعدواشنگٹن میں امریکی کانگریس کی پولیس میں ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔

ولایت پورٹل:امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق 6 جنوری 2021 کو کانگریس کے حملہ آور جو زیر حراست ہیں اور ان کے مقدمے کی سماعت ہونے والی ہے،تاہمٹرمپ کے حامی دائیں بازو کے انتہاپسندگروہوں نے ان کی حمایت میں مظاہرہ کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے بعد امریکی کانگریس پولیس چیف ٹام منجرنے کہا کہ ہم تشدد اور کسی بھی مجرمانہ رویے کو برداشت نہیں کریں گے، انہوں نے کہا کہ امریکی عوام اور کانگریس کے ارکان ہم سے کانگریس کی حفاظت کی توقع رکھتے ہیں۔
امریکی کانگریس کے چیف آف پولیس نے موصول ہونے والی دھمکیوں کا حوالہ دیتے ہوئے زور دیا کہ گزشتہ آٹھ مہینوں کے دوران  کانگریس کی پولیس اس بات کو یقینی بنانے کی تیاری کر رہی ہے کہ 6 جنوری کے واقعات کو دہرایا نہ جائےجبکہ ایک باخبر ذرائع نے سی این این کو بتایا کہ واشنگٹن ڈی سی پولیس مکمل طور پر آپریشنل ہے اور نیشنل گارڈ ہنگامی امداد فراہم کرنے کے لیے تیار ہے۔
امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق  اس ملک کے وزیر دفاع لوئیڈ آسٹن نے کانگریس کی عمارت کی حفاظت کے لیے 100 نیشنل گارڈ فوجیوں کی تعیناتی کی منظوری دے دی ہے، پینٹاگون کے ترجمان نے کہا کہ یہ فورس واشنگٹن ڈی سی سے باہر تعینات کی جائے گی اور اسے صرف مقامی ، ریاستی اور وفاقی سطح پر استعمال کیا جائے گا۔
 پینٹاگون کے ترجمان جان کربی نے بدھ کی رات کہا کہ پینٹاگون کو کانگریس پولیس کی جانب سے منصوبہ بند احتجاج کے سلسلے میں مدد کی درخواست موصول ہوئی ہے،تاہم   کانگریس پولیس کو کس طرح مدد فراہم کی اس کی وضاحت کیے بغیرپینٹاگون کے عہدیدار نے کہا کہ یہ پینٹاگون کی عام پالیسی ہے کہ وہ دیگر ایجنسیوں کو مدد کی درخواست دینے کی اجازت دے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین