Code : 2783 43 Hit

جنرل سلیمانی کو قتل کرنے پر ٹرمپ کو مبارکباد دینا چاہیے؛ نیتن یاھو کی ہرزہ سرائی

صیہونی وزیر اعظم نیتن یاہو کمانڈر شہید قاسم سلیمانی کے خلاف الزام تراشی کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو بھی تل ابیب کو نقصان پہنچائے گا اس کا مقابلہ کریں گے۔

ولایت پورٹل:صیہونی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو نے آج اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف بے بنیاد الزامات کا اعادہ کرتے ہوئے دعوی کیا ہے کہ قدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کے قتل پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو مبارکباد دی جانا چاہئے،سلامتی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نیتن یاھو نے دعوی کیاکہ کمانڈر قاسم سلیمانی لاتعداد بے گناہوں کی ہلاکت کے ذمہ دار تھے،انھوں نے بہت سارے ممالک کو عدم استحکام سے دوچار کیاہے،انھوں نے کئی دہائیوں تک خوف کا بیج بویا اور اس کی بدتر منصوبہ بندی کر رہا تھالہذا اس دہشت گرد کے خلاف کارروائی کرنے پر ٹرمپ کی تعریف کی جانی چاہئے،صہیونی میڈیا کے مطابق ، انہوں نے عراق میں امریکی دہشت گردوں سے ایران کےمیزائل مار کر انتقام لینے کے بعد امریکہ کے لئے اپنی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل مکمل طور پر امریکہ کے ساتھ کھڑا ہے،امریکہ کا اسرائیل سے بہتر کوئی دوسرا دوست نہیں ہے ، اور اسرائیل کا امریکہ سے بہتر دوست نہیں ہے،صہیونی وزیر اعظم نے گویا ابھی تک ایران کے میزائل انتقام سے سبق نہیں سیکھاہے  تبھی تو تہران کے خلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے یہ دعویٰ کیااسرائیل  پر آشوب مشرق وسطی میں استحکام کی ایڑی ہے،صیہونی وزیر اعظم نے مزید کہا کہ ہم ان لوگوں کے خلاف ڈٹ کر کھڑے ہیں جو ہمیں تباہ کرنا چاہتے ہیں، جو بھی ہم پر حملہ کرے گا اس کو سخت جواب دیا جائے گا،نیتن یاھو نے مزید کہاکہ ہماری طاقت کی وجہ سے ، مغربی دنیا اور مسلم دنیا کے ساتھ ہمارے تعلقات وسیع پیمانے پر تبدیل ہو رہے ہیں،انھوں نے بے بنیاد دعوی کرتے ہوے کہا کہ شاید ہی کوئی اسلامی ملک ہو جس کے اسرائیل کے ساتھ تعلقات مضبوط نہیں ہو رہے ہوں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین