ٹرمپ کی سعودی عرب کو فوجی امداد منقطع کرنے کی دھمکی کا انکشاف

حال ہی میں انکشاف ہوا ہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے حالیہ اوپیک سربراہ اجلاس سے قبل سعودی عرب کی فوجی امداد منقطع کرنے کی دھمکی دی تھی۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی نے ایک خصوصی رپورٹ میں انکشاف کیا ہےکہ کس طرح ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کو دھمکی دی تھی۔
رپورٹ کے مطابق2 اپریل کو سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ فون پر ٹرمپ نے انہیں دھمکی دی تھی کہ اگر پیٹرولیم برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم (اوپیک) تیل کی فراہمی میں کمی لانا شروع نہیں کرتی ہے تو وہائٹ ہاؤس امریکی کانگریس کو سعودی عرب سے اپنی فوج واپس بلانے کے لیے سلسلہ میں بل پاس کرنے سے نہیں روکے گا۔
کہا جارہا ہے کہ ٹرمپ کے اس  دھمکی آمیز  پیغام کے دس دن کے اندراوپیک نے تیل کی فراہمی میں کمی لانا شروع کردی۔
اس رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے امریکی صدر کے ساتھ نجی گفتگو کرنے کے لئے ٹیلیفون پر گفتگو کے دوران اپنے تمام افسران اور معاونین کو اجلاس کے کمرے سے باہر بھیج دیا تھا۔
یادرہے کہ اس سے قبل بھی کچھ امریکی سینیٹرزجن میں کیون کررر اور ڈین سلیون شامل تھے ، نے ایک ایسا مسودہ تیار کیا تھا جس میں امریکہ سے پیٹریاٹ اور میزائل دفاعی نظاموں کے ساتھ ساتھ سعودی عرب سے اپنی تمام فوجیں واپس بلانے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔
واضح رہے کہ تیل کی فراہمی میں کمی کے بارے میں امریکہ اور سعودی عرب کے درمیان اختلافات کے سبب واشنگٹن میں اس قانون کی پیروی کی گئی ، حالانکہ ریاض کے حکام بالآخر اوپیک کے حالیہ اجلاس میں تیل کی فراہمی کو کم کرنے پر راضی ہوگئے کیوں کہ ان کےپاس اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین