Code : 2271 89 Hit

ٹرمپ،نیتن یاہو اور بن سلمان کا ایران مخالف لرزتا ،ٹوٹتا،بھکرتا اتحاد

امریکی صدر، صہیونی وزیر اعظم اور سعودی ولی عہد کا ایران مخالف اتحاداتنا کمزور اور کھوکھلا ہوچکا ہے کہ اس کی بنیادوں پر لرزہ طاری ہے ۔

ولایت پورٹل:ایک صیہونی اخبار نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ امریکی صدر، صہیونی وزیر اعظم اور سعودی ولی عہد کا ایران مخالف اتحاداتنا کمزور اور کھوکھلا ہوچکا ہے کہ اس کی بنیادوں پر لرزہ طاری ہے  اس لیے کہ اس اتحاد کے تینوں فریقوں  کو اپنے اپنے ملک میں  چیلنجز اور خلفشار کا سامنا ہے، صہیونی اخبارہارٹیز نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ،نیتن یاہو اور بن سلمان تینوں رہنما مل کے  ایران کی مخالف سیاست پر گامزن تھے لیکن اب یہ اتحاد ختم ہو رہا ہے  اس لیے کہ  ان میں سے ہر ایک کو اپنے ہی ملک میں اتنی مشکلات کا سامنا ہے  کہ انھیں  ایران کی طرف دیکھنے کی فرصت ہی نہیں ملتی ،اخبار نے مزید لکھا ہے کہ  امریکہ کے ایران کے ایٹمی پروگرام سے نکل جانے کے بعدٹرمپ مختلف مشکلات میں گر چکے ہیں ،نیتن یاہو بھی قانونی  مشکلات میں پھنسے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے  انھیں ہر روز  کورٹ کچہری کے چکر لگا نے پڑ رہے ہیں اسی طرح سعودی ولی عہد کی سیاست بھی  دن بدن  کمزور سے کمزور تر ہوتی چلی آرہی ہے  ،تینوں رہبر داخلی سطح پر بحران کا شکار ہو چکے ہیں، ٹرمپ کے مؤاخذہ اور یوکرئن کے صدر سے ان کی ٹیلی فون پر ہونے والی   گفتگو درد سر بنی ہوئی ہے، نیتن یاہو کو آئے دن کورٹ میں  حاضر ہونا پڑتا ہے،ادھر محمد بن سلمان کے گلے سے سعودی صحافی جمال خاشقجی کا قتل  ابھی اترا بھی نہیں تھا کہ شاہ  سلمان کے ذاتی محافظ کے پراسرار قتل نے انھیں مزید گوشہ نشینی اختیار کرنے پر مجبور کردیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम