عراق سے امریکی فوجوں کے نکلنے کا وقت مقرر کیا جاچکا ہے:عراقی پارلیمنٹ ممبر

عراق کے پارلیمانی اتحادالفتح سے وابستہ ایک رکن کا کہنا ہے کہ عراق سے امریکی فوجوں کے انخلا کا وقت بغداد اور واشنگٹن کے درمیان ہونے والے ایک خفیہ معاہدہ میں طے پاچکا ہے۔

ولایت پورٹل:بغداد الیوم  کی رپورٹ کے مطابق عراق کے پارلیمانی اتحادالفتح سے وابستہ پارلیمنٹ کے ممبر مختار الموسوی نے کہا کہ امریکی افواج کبھی بھی زیادہ دیر تک عراق میں نہیں رہیں گی  اور اس پر واشنگٹن کے ساتھ اسٹریٹجک مذاکرات میں تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔
الموسوی نے مزید کہا کہ بات چیت کے دوران  دونوں فریقین نے امریکی فوجیوں کی واپسی کے لئے ایک ٹائم ٹیبل پر خفیہ طور پر اتفاق کیا ہے لیکن اس کا انکشاف نہیں کیا۔
انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس موجود معلومات کے مطابق طے پایا ہے امریکی فوجی امریکی انتخابات سے قبل عراق سے چلے جائیں گے۔
الموسوی نے موجودہ مالی بحران پر قابو پانے میں عراق کی حمایت کرنے کے امریکی وعدوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں معاشی بحران پر قابو پانے میں امریکیوں کی طرف سے عراق کی حمایت کرنے کی کوئی امید نہیں ہے ، کیونکہ واشنگٹن عراق کو تباہ کرنے کی کوشش کر رہا ہےنہ کہ اس کی ترقی  کی اور اگر وہ ایسا کرنے کا ارادہ کرتا تو 2003 کے بعد سے کر چکا ہوتا۔
یادرہے کہ جمعرات (11 جون) کو ایک ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ بغداد اور واشنگٹن کے مابین اسٹریٹجک مذاکرات کا آغاز ہوا جن میں بعد کے مراحل میں عراق اور امریکہ کے درمیان دوطرفہ اور مستقبل کے تعلقات کا خاکہ پیش کیا جاناہے۔
قابل ذکر ہے کہ عراق کا امریکہ سے ایک سب سے اہم مطالبہ عراق سے غیرملکی فوجیوں خصوصا امریکی فوجیوں کا انخلاء ہے
ایک  تخمینہ کے مطابق عراق میں 6000 سے 9000 کے درمیان امریکی فوجی موجود ہیں۔
 
 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین