Code : 2436 96 Hit

ایک ہزار سوڈانی فوجی خلفیہ حفتر کی مدد لیے لیبیا روانہ

سوڈان ملٹری کونسل کے نائب صدر نے لیبیا میں خلیفہ حفتر کی پشت پناہی کرنے کے لیے ایک ہزار سوڈانی فوجی بھیجے ہیں تاکہ وہ ان کی مدد سے لیبیا کے دار الحکومت طرابلس پر حملہ کر سکے۔

ولایت پورٹل:الجزیرہ نیوز ایجنسی نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ انھیں اقوام متحدہ کے ماہرین کی تیار کردہ ایک رپورٹ ہاتھ لگی ہے  جس میں آیا ہے کہ سوڈان ملٹری کونسل کے نائب صدر نے  لیبیا میں  حکومت مخالف سرگرمیوں میں ملوث خلیفہ حفتر کی پشت پناہی کرنے کے لیے ایک ہزار سوڈانی فوجی بھیجے ہیں تاکہ  وہ ان کی مدد سے  لیبیا کے دار الحکومت طرابلس پر حملہ کر سکے،الجزیرہ  نیو زایجنسی نے اعلان کیا ہے کہ لیبیا پر لگائی گئی بین الاقوامی پابندیوں کی نگرانی کرنے والی اقوام متحدہ کے ماہرین  کی  ٹیم کی رپورٹ میں آیا ہے کہ اقوام متحدہ کے رکن بعض ممالک نے لیبیا پر لگائی گئی اسلحہ جاتی پابندی کی خلاف ورزی  کی ہے،ان ممالک میں متحدہ عرب امارات ،سوڈان،ترکی اور اردن شامل ہیں،رپورٹ میں آیا ہے کہ   سوڈان ملٹری کونسل کے نائب صدر  جنرل محمد حمدان حمیدتی نے لیبیا کی مسلح تنظیموں کو اسلحہ فراہم کرنے  کے سلسلہ میں اقوام متحدہ کی جانب سے لگائی جانے والی پابندی کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اس سے پہلے گذشتہ جولائی  بھی سوڈانی سریع الحرکت فوج کے ایک ہزار جوانوں کو لیبیا بھیجا گیا تھا،اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق جنرل حمیدتی نے یہ فوج  بنغازی کی محافظت اور جنرل خلیفہ حفتر کی پشت پناہی کرنے کے لیے بھیجی ہے ،یاد رہے کہ  مشرقی لیبیا میں ایک بڑی فوجی طاقت کے مالک  ریٹائرڈ جنرل خلیفہ حفتر نے  گذشتہ اپریل کے مہینے سے طرابلس پر حملوں کا آغاز کر رکھا ہے ،رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ سوڈان کی فوج کینیڈا کی ایک عوامی تعلقات کمپنی اور سوڈان ملٹری کونسل کے درمیان ہونے والے معاہدہ کے تحت لیبیا گئی ہے،اقوام متحدہ کی رپورٹ کے باوجود سوڈانی مسلح افواج کے ترجمان عامر محمد الحسن لیبیا میں کسی بھی طرح کی سوڈانی فوج کی موجودگی کا انکار کیا ہے ،اقوام متحدہ کی رپورٹ میں یہ بھی آیا ہے کہ متحدہ عرب امارات  نے خلیفہ حفتر کو نہایت ترقی یافتہ ایئر ڈیفنس سسٹم دیا ہے  جس سے لیبیا پر لگائی جانے والی اسلحہ جاتی پابندی کی خلاف ورزی ہوئی ہے۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम