Code : 3161 72 Hit

اس بار آل سعود میں بن سلمان نے کی ہے: القدس العربی

سعودی ولی عہد کے ہاتھوںسعودی شہزادوں کی گرفتاریاں سعودی شاہی خاندان کے خلاف بغاوت ہیں ،بن سلمان اپنی بادشاہی کے پائے مضبوط کرنے کے درپے ہیں،بغاوت کا الزام تو صرف ایک بہانہ ہے۔

ولایت پورٹل:انٹر ریجنل اخبار القدس العربی کی رپورٹ کے مطابق سعودی شاہی محل کے قریبی ذرائع نے حال ہی میں دعوی کیا تھا کہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو معزول کرنے کے لئے ریاض میں ایک سازش رچی جارہی ہے جس کی ان کے پاس متعدد دلیلیں موجود ہیں۔
شاہی خاندان سے وابستہ ذرائع کا کہنا ہے کہ  میں حالیہ گرفتاریوں کے بعد بن سلمان کے خلاف بغاوت کے ان کے دعوے کو تقویت پہنچی ہے۔
یادرہے کہ گرفتار ہونے والی سب سے نمایاں شخصیات میں سعودی فرمانروا شاہ سلمان کے بھائی  احمد بن عبد العزیر ، سابق ولی عہد محمد بن نائف اور اس کے بھائی نواف بن نائف شامل ہیں۔
سعودی وزیر داخلہ عبد العزیز بن سعود بن نائف، ان کے والد ، مشرقی سعودی عرب کے امیر سعود بن نائف  اور بڑے بیٹے سابق سعودی ولی عہد نائف بن عبدالعزیز کو بغاوت کی مبینہ کارروائیوں کے الزام  پر شاہی محل میں پوچھ گچھ کے لئے طلب کیا گیا۔
بن سلمان کا دعوی ہے کہ بغاوت میں شامل شہزادوں کے امریکیوں سمیت غیر ملکی جماعتوں سے بھی رابطے تھے۔
القدس العربی نے اپنی رپوٹ لکھا ہے کہ یہ ایک مضحکہ خیز الزام ہے کیونکہ احمد بن عبد العزیز غیر ملکی گروہوں کی کالوں کی وجہ سے سعودی عرب واپس آئے ہیں  اور امریکیوں نے بھی ان سے وعدہ کیا ہے کہ اگر وہ ریاض واپس  جاتے ہیں تو محفوظ رہے گے، یہی وجہ ہے کہ ان کی واپسی سلمان اور ان کے ولی عہد کی بیعت شمار کی جاتی ہے۔






1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین