Code : 4082 11 Hit

یہودیوں کی عید کے موقع پر لبنان میں شاندار آتش بازی ہوئی ہے؛صیہونی عہدہ دار

صیہونی حکومت کے ایک سابق ممبر پارلیمنٹ نے لبنان میں ہونے والے خوفناک دھماکے کو آتش بازی کی ایک شاندار نمائش قرار دیا۔

ولایت پورٹل:صیہونی اخبار یدیوت آہرونت کی رپورٹ کے مطابق  صیہونی کنسیٹ کے سابق ممبر اور صیہونی نیشنلسٹ پارٹی کے رہنما موشے فلین نے بیروت میں خوفناک دھماکے پر خوشی کا اظہار کیا جس میں 100 سے زائد افراد جاں بحق اور ہزاروں زخمی ہوئے، فلین نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر بیروت کی بندرگاہ میں ہونے والے دھماکے کو یہودیوں کی ایک مذہبی کے موقع کے حیرت انگیز آتش بازی کا مظاہرہ قرار دیا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ میں ان تمام باصلاحیت افراد اور ہیروز کی تعریف کرتا ہوں جنہوں نے اس عید کے موقع پر شاندار جشن منایا۔
واضح رہے کہ صہیونی عہدیدار نے اس افسوسناک واقعے پر خوشی کا اظہار کیا جس  پر مختلف ممالک کے رہنماؤں اور عہدیداروں نے اس کے واقعہ کے بعد سے ہی لبنانی عوام اور حکومت سے اظہار تعزیت کیا ہے  اور اس ملک کو امداد بھیجنے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے،درایں اثنا عراقی پارلیمنٹ میں الفتح اتحاد کے رکن سعد السعداوی نے بدھ کے روز ایک تقریر میں کہا کہ بیروت بمباری کی اصل وجہ ابھی تک معلوم نہیں ہوسکی ہے  لیکن اس میں اسرائیلی حکومت کے ملوث ہونے کا امکان کم نہیں ہے، عراقی پارلیمنٹ میں صادقون دھڑے کے ایک رکن محمد البلداوی نے بھی آج کہا ہے کہ یہ خوفناک دھماکہ کوئی حادثہ نہیں تھا اور اس کے پیچھے بھی کئی  ہاتھ تھے نیز ہمارے پاس ایسے شواہد موجود ہیں جو اس بات کی علامت ہیں کہ اس کارروائی کے پیچھے صیہونی حکومت کا ہاتھ تھا۔
گذشتہ روز امریکی صدر نے یہ بھی دعوی کیا تھا کہ امریکی فوجی رہنماؤں نے اندازہ لگایا ہے کہ بیروت دھماکے کسی حملے یا کسی بم دھماکے کا نتیجہ   ہوسکتےہیں،یادرے کہ بیروت میں منگل کی شام ایک تباہ کن دھماکے میں 100 سے زائد افراد کے جاں بحق ہونے اور 4000 سے زیادہ زخمی ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین