Code : 2953 426 Hit

ایران کی انتقامی کاروائیوں کے بادل ابھی بھی ہمارے سروں پر منڈلا رہے ہیں: سینٹکام کمانڈر

سینٹکام کے کمانڈر کا کہنا ہے کہ عین اسد اڈے پر میزائل حملے کے باوجود ایران کی جانب سے امریکہ کے خلاف انتقامی کاروائیوں کا خطرہ ابھی باقی ہے ۔

ولایت پورٹل:مشرق وسطی میں امریکی افواج(سینٹکام) کے کمانڈر نے بحیرہ عرب میں امریکی بحریہ کے جہاز کے دورے کے دوران کہا ہے کہ  عین اسد اڈے پرایران کے  میزائل حملے کے بعد بھی اس ملک کی جانب سے  انتقامی کاروائیوں کا خطرہ  ابھی باقی ہے ۔
اسٹرپس ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق سینٹکام کی افواج کے کمانڈر ، جنرل کینتھ فرینک میک کینزینے بحرۂ عرب میں تعینات ٹرومین کیریئر پر امریکی فوجیوں سے خطاب کے دوران کہا کہ  امریکہ  کو ابھی بھی ایران کی انتقامی کارروائیوں کا خطرہ ہے۔
جنرل مک کینزی نے اپنی  تقریر میں دعوی کیا کہ ایران نے عین اسد پر حملے کے بعد اپنی میزائل سرگرمیوں کو کم کردیاہے نیزاس کی  فضائی دفاعی یونٹیں بھی معمول کے مطابق کام کررہی ہیں۔
میک کینزی نےمزید کہا کہ حالیہ ہفتوں میں خلیج فارس میں ایرانی بحری فوجیں بھی نسبتا معمول کے مطابق کام کررہی ہیں۔
انھوں نے مزید کہ مجھے لگتا ہے کہ ایران نے ہمارے ارادے کو بھانپ لیا اور دیکھا کہ ہم اپنے مفادات کا دفاع کریں گے۔
یادرہے کہ جمعہ کے روز دو امریکی عہدیداروں نے سی این این کو یہ بھی بتایا کہ عین الاسد کے اڈے پر راکٹ حملے سے دماغی چوٹ آنے والے امریکی فوجیوں کی تعداد 64ہوگئی ہے۔
اس سے قبل امریکی مسلح فوج کے سربراہ مارک ملی نے کہا تھا کہ عراق میں عین الاسد اڈے پر ایرانی میزائل حملے کے زخمی ہونے والے فوجیوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔






0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम