Code : 2822 9 Hit

غیرقانونی ریلی میں شریک ہونے پر ہمارے سفیر کی عارضی نظربندی غیرقانونی تھی:برطانیہ

برطانوی وزارت خارجہ نے تہران میں اپنے سفارت خانے میں حفاظتی اقدامات پر نظرثانی کا اعلان کیا ہے۔

ولایت پورٹل:روئٹر نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق تہران میں غیرقانونی ریلی میں شریک ہونے پر  لندن کے سفیر کی عارضی نظربندی کے بعد برطانوی وزارت  خارجہ  کا کہنا ہے کہ ایران میں اپنے سفارتخانے کی سکیورٹی کا جائزہ لے رہے ہیں،رپورٹ کے مطابق برطانوی وزیر خارجہ ڈومینک روب نے پیر کے روز تہران میں موجود اپنے سفارتخانے میں حفاظتی انتظامات کا جائزے کا اعلان کیا ہے،قابل ذکر ہے کہ برطانوی پارلیمنٹ میں تقریر کرتے ہوئے ، روب نے کہا کہ تہران میں ہمارے سفیر کی نظربندی غیر قانونی تھی ، ہم سفیر کے ساتھ تہران کے اس رویے کی وجہ سے سفارتخانے کی سکیورٹی کا جائزہ لے رہے ہیں،انہوں نے یہ بھی کہا  کہ یورپ اور امریکہ کو ایران کا مقابلہ کرنے کے لیے اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہئے تاکہ اس کو مضبوط اور یکساں پیغام دیا جاسکے،برطانوی وزیر خارجہ نے یہ دھمکی بھی دی تھی کہ یورپی یونین سے نکلنے کے بعد لندن پابندیوں کا نیا نطام قائم کرے گا تاکہ وہ ایران پر نئی پابندیاں عائد کرسکے،یادرہے کہ اس سے پہلے بھی سکیورٹی ذرائع ابلاغ میں آچکا ہے کہ  تہران میں تعینات برطانوی سفیر رابرٹ میکیئر ہفتہ کی رات تہران کی  امیرکبیر یونیورسٹی میں غیر قانونی مظاہرے میں موجود تھے  اور غیر قانونی ریلی کی تصاویر اور ویڈیوز تیار کررہے تھے،ایرانی حفاظتی اہلکاروں کے رابرٹ  کے اس غیر قانونی اقدام کی وجہ سے انھیں گرفتار کرکے نظر بند کردیا تاہم کچھ دیر بعد ایرانی وزارت خارجہ کی سفارش پر آزاد کردیا گیا،واضح رہےکہ برطانوی حکومت نے اپنے سفیر کی تہران میں غیرقانونی ریلی میں شرکت کرنے پر نظربند کیے جانے پر رد عمل کا اظہار کرتےہوئے دعوی کیا کہ  تہران کا یہ بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम