Code : 4035 9 Hit

آل سعود کی حکمرانی ہماری سرخ لکیر ہے:مراکش

مراکشی وزیر خارجہ نے رباط میں اپنے سعودی ہم منصب سے ملاقات کے بعداس بات پر زور دیا کہ سعودی عرب کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت ہماری سرخ لکیر ہے۔

ولایت پورٹل:النشرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ریاض اور رباط کے مابین گذشتہ سال کی کشیدگی کے بعد  سعودی وزیر خارجہ فیصل بن فرحان اپنے مغربی ہم منصب ناصر بوریطه سے ملاقات کے لئے کل مراکش پہنچے جہاں ملاقات کے بعد بوریطه نے اپنے سعودی ہم منصب کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں اپنے شہریوں کی خودمختاری اور صحت کو برقرار رکھنے کے لیے سعودی عرب کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات کی حمایت کرنے پر زور دیا۔
یادرہے کہ پچھلے سال دونوں ممالک کے تعلقات اس حد تک خراب ہوگئے تھے کہ  مراکش نے ریاض سے اپنے سفیر کو واپس بلا لیا تاہم آج سعودی وزیر خارجہ کی موجودگی میں مراکشی وزیر خارجہ نے کہا کہ سعودی عرب کی سلامتی اور اس کی علاقائی سالمیت ان کے لیےسرخ لکیرہے، بوریطه نے  کہا کہ مراکش ہمیشہ سعودی عرب کےموقف ، تجزیوں اور جائزوں کو سنتا ہے ، کیونکہ یہ تجزیے ریاض کی خلیج فارس ، مشرق اور شمال میں عرب دوست ممالک کے استحکام اور سلامتی کی خواہش کی وجہ سے ہوتےہیں۔
مراکشی وزیر خارجہ نے یہ کہتے ہوئےکہ اپنے سعودی ہم منصب سے ملاقات میں  انہوں نے مشرق وسطی اور شمالی افریقہ میں علاقائی اور بین الاقوامی صورتحال کا جائزہ لیا،کہا کہ ہمارا سعودی عرب کے ساتھ تمام امور ، اسباب اور حل پر مشترکہ نظریہ ہے، سعودی وزیر خارجہ نے یہ بھی کہا کہ بوریطه کے ساتھ ملاقات سے یہ ظاہر ہوا کہ غیر ملکی مداخلت ، دہشت گردی اور علاقائی سلامتی اور استحکام میں خلل جیسے عرب ممالک کو درپیش چیلینجز کے مقابلہ میں دونوں ممالک کا موقف کافی نزدیک ہے۔
یادرہے کہ گذشتہ سال  سعودی طینل العربیہ  کی جانب سے مراکشی ریگستان میں مراکش کی خودمختاری ،ایسی چیز جو رباط کے لئے قابل برداشت نہیں ہے، پر سوال اٹھانے کے بعد سعودی عرب اورمراکش کے تعلقات میں درار آگئی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین