Code : 3175 138 Hit

کورونا وائرس کے پھیلنے میں امریکی حکومت کا کردار؛ نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ

اگرچہ کورونا وائرس کا پہلا کیس امریکہ کے علاقہ سیئٹل میں فروری کے شروع میں دیکھا گیا تھا ، لیکن وفاقی حکومت نے بروقت تحقیقات کی اجازت نہیں دی اور وائرس کی جانچ میں تاخیرکی وجہ سے اس کے خلاف واشنگٹن کی جانب سے مناسب ردعمل متأثر ہوا۔

ولایت پورٹل:نیویارک ٹائمز نے ایک رپورٹ میں امریکہ میں کورونا وائرس کے پھیلنے کی وجوہات کی نشاندہی کرتے ہوئے لکھا ہے کہ کورونا ٹیسٹ میں تاخیر اس وائرس کے بارے میں امریکی ردعمل کی راہ میں رکاوٹ ہے۔
رپورٹ کے مطابق  رواں سال جنوری کے آخر (فروری کے اوائل) میں امریکی سیئٹل کے علاقے میں کورونا وائرس کا پہلا تصدیق شدہ کیس سامنے آیا تھا  لیکن کیا اس شخص نے دوسرے لوگوں کو متاثر کیا؟ کیا اس سے پہلے وائرس پھیل چکا تھا؟
سیئٹل میں انفیکشنل بیماریوں کے ماہر ڈاکٹر ہیلن وای  جو کئی مہینوں سے ایک فلو ریسرچ پروجیکٹ کے حصے کے طور پر اس علاقے کی نگرانی کر رہے ہیں ، نے  پیوجٹ گو ساؤنڈ کے رہائشیوں کی ناک کا نمونہ لیا جنھیں فلو کی علامات تھیں ،اب ان کی میڈیکل ٹیم کو کورونا وائرس کے ٹیسٹوں کو دوبارہ کرنے کے لئے ریاستی اور وفاقی عہدیداروں کے تعاون کی ضرورت تھی ، لیکن ریاستی اور وفاقی حکام نے بار بار ڈاکٹر ہیلن چون کی درخواست کو مسترد کردیا۔
انٹرویوز اور ای میلز سے پتہ چلتا ہے کہ چین کے کورونا وائرس میں ملوث ہونے اور چین کے باہر نامعلوم وائرس کے پھیلاؤ کے ہفتوں بعد بھی ، امریکی اور وفاقی عہدیداروں نے سیئٹل کی میڈیکل ٹیم کی طرف سے کورونا وائرس کی تحقیق کی حمایت کرنے کی درخواست سے اتفاق نہیں کیا۔
رپورٹ کے مطابق ، رواں سال جنوری کے آخر (فروری کے اوائل) میں امریکی سیئٹل کے علاقے میں کورون وائرس کا پہلا تصدیق شدہ کیس سامنے آیا تھا ، لیکن کیا اس شخص نے دوسرے لوگوں کو متاثر کیا؟ کیا اس سے پہلے وائرس پھیل چکا تھا؟
 


1
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम