Code : 2323 75 Hit

یمن سے اماراتی فوج کی وطن واپسی؛سعودی اتحاد کو بڑا جھٹکا

اماراتی فوج کی واپسی کا مطلب یہ ہے کہ اب عدن کی نام نہاد حکومت کے ساتھ اماراتی دربار کا کوئی تعاون نہیں ہوگا اور نہ ہی وہ سعودی اتحاد کے ساتھ ملکر یمن میں مزید بلی کے بکرے بن سکیں گے ۔ اس فیصلہ سے جہاں ایک طرف سعودی خیموں میں صف ماتم بچھی ہے وہیں یمن کی مقاومت اور عوام میں خوشی ہے کہ اللہ نے ایک ظالم کو دوسرے ظالم سے ٹکرا کر یمنیوں کو فتح کی نوید دی ہے۔

ولایت پورٹل: آناتولی نیوز کی رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات نے یمن کے شہر عدن سے اپنی ساری فوج واپس بلا لی ہے اور اب اس کی جگہ سعودی فوج مفرور حکومت کے نام نہاد دارالحکومت کا انتظام سنبھالے گی۔
اس رپورٹ میں یہ بھی آیا کہ متحدہ عرب امارات نے اپنی تمام افواج کے ساتھ ساتھ اپنا تمام جنگی ساز و سامان اور ایمبولینسیں بھی واپس بلا لی ہیں جس سے صاف ظاہر ہے کہ اب متحدہ عرب امارات برسوں ٹھوکریں کھانے کے بعد سعودی اتحاد سے نکلنے کا ارادہ کرچکا ہے۔
یاد رہے کہ 17 جنوری 2015 سے یمن کی مفرور حکومت کے نام نہاد دارالحکومت کا سارا انتظام متحدہ عرب امارات کے ہاتھ میں تھا اور گذشتہ اگست کے مہینہ سے عدن کے ساتھ کچھ کہا سنی کے بعد امارات نے اپنی فوج واپس بلانے کا فیصلہ کیا تھا جس کے سبب لگاتار 2 مہینہ تک سعودی حکومت عدن اور امارات کے درمیان غیر مستقیم طور پر ثالثی کرتا رہا لیکن اس کا کوئی فائدہ نہ ہوا اور آخرکار آج صبح امارات نے اپنے ارادے کو فیصلہ میں تبدیل کرتے ہوئے آج عدن کی چھاونی کو مکمل طور پر خالی کردیا ہے جس کے بعد اب اس شہر کا انتظام سعودی فوج کے ہاتھوں میں چلا گیا۔
اماراتی فوج کی  واپسی کا مطلب یہ ہے کہ اب عدن کی نام نہاد حکومت کے ساتھ اماراتی دربار کا کوئی تعاون نہیں ہوگا اور نہ ہی وہ سعودی اتحاد کے ساتھ ملکر یمن میں مزید بلی کے بکرے بن سکیں گے ۔ اس فیصلہ سے جہاں ایک طرف سعودی خیموں میں صف ماتم بچھی ہے وہیں یمن کی مقاومت اور عوام میں خوشی ہے کہ اللہ نے ایک ظالم کو دوسرے ظالم سے ٹکرا کر یمنیوں کو فتح کی نوید دی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम