Code : 2809 17 Hit

نتن یاہو کی قانونی استثنیٰ کی درخواست نامنظور ہونے کے امکان: یروشلم پوسٹ

صہیونی زرائع ابلاغ کے مطابق کنیسٹ کے قانونی مشیر وزیر اعظم کی استثنیٰ کی درخواست کی جانچ کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کی کوششوں میں تاخیر کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

ولایت پورٹل:صیہونی اخبار یروشلم پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق اگر چہ بنیامین  نیتن یاہو صیہونی پارلیمنٹ سے عدالتی استثنیٰ کے لئے ان کی درخواست کو منظور کرنے کی امید کرتے ہیں لیکن اسرائیلی میڈیا میں اس درخواست کو مسترد کرتے ہوئے اس کی سماعت کی خبریں گردش کررہی ہیں،رپورٹ کے مطابق توقع کی جارہی ہے کہ کینیسٹ کے قانونی مشیر ایال یینون اتوار کے روز ایک فیصلے میں یہ کہیں کہ کینیسٹ کے سربراہ یلی ایڈلسٹین نیتن یاہو کی استثنیٰ کی درخواست کی جانچ پڑتال کے لئے پارلیمانی کمیٹی کے فیصلہ کو مقبوضہ فلسطین میں عام انتخابات کے بعد تک ملتوی کرسکتے ہیں،یادرہے کہ کینیسٹ میں واضح اکثریت نیتن یاھو کو قانونی استثنیٰ دینے کی مخالفت کرتی ہے ، یہی وجہ ہے کہ پارلیمانی کمیٹی سے اس درخواست کو مسترد کرنے کی توقع کی جا رہی ہے ، جس سے نیتن یاہو کے الزامات کو مقدمے میں لانے کی راہ ہموار ہوگی اور ان پر مقدمہ  چلناطے شدہ ہے،واضح رہے کہ یروشلم پوسٹ کے مطابق ، بلیک اینڈ وائٹ ، اسرائیل بیتنا ، لیبر ، مشترکہ عرب لیگ اور ڈیموکریٹک یونین  جیسی جماعتوں نے اعلان کیا ہے کہ وہ کینیسٹ  میں یاہو کے استثنیٰ کی درخواست کے خلاف ووٹ دیں گی،بلیک اینڈ وائٹ پارٹی کے رہنما ، بینی گینٹز نے بھی اعلان کرتے ہوئے ایڈلسن کو دھمکی دی ہے  کہ وہ عام انتخابات سے قبل نیتن یاہو کی درخواست پر غور کرنے کے لئے پارلیمانی کمیٹی دیں ورنہ کینیسٹ   سےان کی برطرفی کی کاروائی کریں گے،واضح رہے کہ اس سے قبل یہ کہا جارہا تھا کہ ایڈلسٹن انتخابات تک نیتن یاہو کی سے استثنیٰ کی درخواست  پر غور کرنے کے لیے کنیسٹیٹ کمیٹی  کو روکنے کی کوشش کر رہے ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम