پابندیاں، لوٹ مار، قبضہ؛شامی عوام کی مشکلات

شام کے وزیر خارجہ نے دنیا کے متعدد ممالک پر عائد پابندیوں کو دنیا کی اقوام کے خلاف قتل عام کا آلہ قرار دیا۔

ولایت پورٹل:العہد انفارمیشن ویب سائٹ نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں شام کے وزیر خارجہ فیصل المقداد کی تقریر کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا کہ بعض ممالک پر عائد پابندیاں درحقیقت قتل عام کے ہتھیار ہیں جنہوں نے ان ممالک کی سرزمین، قوم، خودمختاری اور فوج کو کو نشانہ بنایا ہے، اس کی واضح مثال شام میں دیکھی جا سکتی ہے۔
 شام کے وزیر خارجہ نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی  کے77ویں اجلاس میں اپنے خطاب میں مزید کہا کہ دوسرے ممالک پر اپنا تسلط جمانے اور ان کی دولت لوٹنے پر ممالک کے اصرار نے جنگوں میں اضافہ کیا ہے اور بین الاقوامی امن و سلامتی کو خطرے میں ڈال دیا ہے جو دہشت گردی اور افراتفری پھیلانے کا سبب بنتا ہے اور عالمی معیشت نیز دنیا میں غذائی تحفظ کو خطرے میں ڈالتا ہے۔
 المقداد نے ایک نئے اور کثیر قطبی عالمی نظام کی تشکیل پر زور دیا جو اقوام متحدہ کی چھتری کے نیچے اور اپنے مقصد کے فریم ورک کے اندر کام کرے، اس تناظر میں انہوں نے زور دے کر کہا کہ اس نقطہ نظر سے یہ کہنا چاہیے کہ شام کی جنگ دنیا پر اپنا تسلط برقرار رکھنے کے لیے مغرب کی کوششوں کا حصہ ہے، فیصل المقداد نے دہشت گردی، مغربی دباؤ نیز امریکی اور ترک جارحیت پسندوں کی طرف سے شام کے وسائل کی لوٹ مار کو اپنے ملک کے عوام کی مشکلات کا سبب قرار دیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین