Code : 4099 12 Hit

لبنانی عوام کی مدد ضرورت نہیں،ہمارا ان سے کیا لینا دینا ہے؛بیروت سانحہ پر سعودی عوام کی ہمدردی کا انداز

سعودی سوشل میڈیا صارفین نے بیروت بندرگاہ پر ہونے والے دھماکے کے بعد لبنانی عوام کی حمایت کرنے کے بجائے ’’بقیق ہزار لبنان سے بہتر ‘‘ کے نام سے ہیش ٹیگ پوسٹ کیا جس نے عرب ممالک اور دنیا بھر کے صارفین کو حیرت میں ڈال دیا۔

ولایت پورٹل:لعالم نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق سعودی سوشل میڈیا صارفین نے بیروت سانحہ کے بعد لبنانی عوام کی حمایت کرنے کے بجائے ’’بقیق ہزار لبنان سے بہتر ‘‘ کے نام سے ہیش ٹیگ پوسٹ کیا   جس میں انہوں نے لکھا ہے کہ لبنان نے انھیں کوئی مطلب نہیں ہے اور لبنان میں امداد بھیجنے کے بجائے  سعودی بے روزگاروں کی مدد کی جانی چاہئے،یادرہے کہ یہ ہیش ٹیگ اس وقت سامنے آیا ہے جب سعودی عرب کے علاقے شرقیہ میں عادر  کمپنی نے لبنانی پرچم سے کمپنی کے ٹاور کو سجایا ۔
سعودی سوشل میڈیا صارفین نے لبنان کی جانب سے بقیق میں واقع ارامکو تیل کی تنصیبات پر گذشتہ سال یمنی فوج کے حملے کی مذمت نہ کرنے پر انتقامی کارروائی میں یہ ہیش ٹیگ پوسٹ کیا تھا، شجاع المطرفی نے لکھا کہ حکومت کو ٹاور کے افسران سے لبنانی پرچم کے بجائے جنوبی سرحد پر لڑنے والے سعودی فوجیوں کی تصاویر لگانے کا مطالبہ کرنا چاہئےاس لیے کہ  وہ ہمارے لیے دس لاکھ لبنانوں سے زیادہ اہم ہیں۔
 بکر نے لکھا کہ سعودی عرب ،لبنان ، اس ملک کے عوام اور ان کے صدر سے کہیں زیادہ قیمتی ہے، عبد اللہ نے لکھا: لبنانی پرچم کے ساتھ ٹاور سجانے سے سعودی عوام کے جذبات ظاہر نہیں ہوتے ہیں، عثمان نے لکھا: لبنان کی بجائے سعودی عوام کی مدد کرنا زیادہ ضروری ہے، عیون نورہ نے لکھا: "لبنان کو دی جانے والی امداد حکومت کی طرف سے ہے ورنہ ہمیں اس ملک کے لوگوں سے کوئی محبت نہیں ہے، سواق سعودی نے لکھا:سعودی عرب کے بے روزگاروں کی کی مدد کی جانی چاہئے اس لیے کہ ان کی ترجیح لبنانیوں سے کہیں زیادہ ہے، میم جو بہت فرقہ پرست ہیں ،نے لکھا :ہمیں صرف سنیوں کی مدد کرنی چاہئےلہذا طیارہ مدد کے لئے کافی ہے اور لبنان کی مدد کے لئے ہوائی پل کی ضرورت نہیں ہے ۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین