Code : 3570 12 Hit

یمنی بحران کا واحد مستقل حل سعودی عرب کو اسلحہ بیچنا بند کرنا ہے:آکسفیم

ایک بین الاقوامی امدادی تنظیم نے تاکید کی ہے کہ دوسرے ممالک یمن کے بحران کے حل کے لئے سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کرنا بند کردیں۔

ولایت پورٹل:عربی 21 وی سائٹ کی رپورٹ کے مطابق 98 ممالک میں 15 ماتحت تنظیموں کی صورت میں غربت ، بھوک اور ناانصافی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے بین الاقوامی امدادی ایجنسی آکسفیم نے یمنی عوام کے خلاف سعودی عرب کی سالہا سال سے جاری جارحیت پر تنقید کی ہے۔
آکسفیم کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ، جوز ماریا وائرا نے زور دے کر کہا کہ یمنی بحران کا واحد مستقل حل جنگ بندی کا قیام اور سعودی عرب اور اس کے اتحاد  میں شامل ممالک کو اسلحہ فروخت کرنا بند کرنا ہے۔
مذکورہ امدادی تنظیم کا کہنا ہے کہ عالمی برادری کو یمن کے تمام فریقوں پر جنگ بندی اور مفید مذاکرات کی بحالی پر راضی ہونے کے لئے دباؤ ڈالنے کے لئے پوری کوشش کرنی چاہئے۔
بین الاقوامی عہدیدار نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ مذاکرات کا اصل ہدف یمن کے بحران کا پرامن حل تلاش کرنا چاہئے ، کہا کہ یمن پانچ سال کے تنازعے کے بعد دنیا کی سب سے بڑی انسانی تباہی کا سامنا کر رہا ہے۔
انہوں نے یمن میں کورونا وائرس پھیلنے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ آدھے طبی مراکز سخت محنت کر رہے ہیں۔
 ویرا نے آخر میں کہا  کہ لاکھوں یمنی باشندوں کی امداد کرنےاور ان کی جان بچانے کے لئے فوری طور پر فنڈز اکٹھے کرنے چاہئے۔
یادرہے کہ سعودی عرب نے 6 اپریل کو دعوی کیا تھا کہ اس نےکورونا وائرس کا مقابلہ کرنے کے لیے یمن میں ہوائی اور زمینی حملوں کو روک دیا ہے۔
تاہم یہ دعوی صرف خطے اور دنیا میں رائے عامہ کو منحرف کرنے کے لئے کیا گیا تھا ، اور یمنی عہدیداروں کے مطابق ، نہ صرف یہ آپریشن بند نہیں کیا گیا ہے ، بلکہ جوف جیسے کچھ محاذوں پر  اس  کی کاروائیوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین