Code : 3034 73 Hit

عین الاسد کے زخمیوں کی تعداد رکنے کا نام ہی نہیں لے رہی

پنٹاگون نے ایک بار پھر ایران کی جانب سے ہونے والے انتقامی حملہ میں عین الاسد میں برین ہیمرج کا شکار ہونے والے امریکی فوجیوں کی تعداد میں اضافہ کا اعلان کیا ہے۔

ولایت پورٹل:ہل نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق امریکی وزارت خارجہ ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی جانب سے عین الاسد پرہونے والے انتقامی حملہ میں زخمی ہونے والے امریکی فوجیوں  میں سے ایک مزید فوجی میں (Traumatic Brain Injury) کی علامات ظاہر ہوئی ہیں جس کے بعد مذکورہ حملہ کے دروان زخمی ہونے والے فوجیوں کی تعداد 110 ہوگئی ہے۔
پنٹاگون میں اپنے بیان میں مزید کہا ہے کہ  فوجی ڈاکٹر عین الاسد سے لے کر جرمنی تک  فوجیوں کی طبی دیکھ بھال میں بہتری لانے کی کوشش کررہے ہیں تاکہ برین ہیمرج کا شکار ہونے والے فوجیوں میں سے ستر فیصد دوبارہ اپنی ڈیوٹیوں پر واپس آسکیں۔
قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے حال ہی میں دعوی کیا تھا کہ ایران کے حملہ میں ہمارے فوجی زخمی نہیں ہوئے ہیں بلکہ ان کے سروں میں جو چوٹیں آئی ہیں اس سے ان کے سر میں صرف درد ہورہا ہے ۔
واضح رہے کہ اس سے روئٹر نیوز ایجنسی نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا تھا کہ عراق میں واقع امریکی فوجی اڈے پر ایران کے حملہ میں کچھ امریکی فوجی اس حد تک زخمی ہوئے ہیں کہ لگتا ہے کہ ٹریلر ان سےٹکرا گیا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر کی جانب سےفوجیوں کی چوٹوں کو کم اہمیت ظاہر کرنے کو لے سابقہ امریکی فوجیوں اور پارلیمنٹ نمائندوں نے بھی ٹرمپ کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔
یادرہے کہ ایران کی انتقامی کاروائی میں زخمی ہونے والے امریکی فوجیوں کی تعداد میں حالیہ ہفتوں میں اضافہ ہوا ہے جبکہ ابتدائی  اعداد وشمار کے مطابق صرف 11افراد کے زخمی ہونے کا اعلان کیا گیا تھا پھر کچھ دن بعد یہ تعداد34ہوئی ، اس کے بعد 28 جنوری کو 50 افراد کا اعلان کیا گیا  اور آج110 تک پہنچ گئی ہے۔

1
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम