یمن جنگ میں متحدہ عرب امارات کا منفی کردار

متحدہ عرب امارات جنگ سے دستبرداری کا اعلان کرکے یمن میں اپنے جرائم پر پردہ ڈالنے کی کوشش کرتا ہے اور یمنی جنگ میں چالیں کھیلنا چاہتا ہے تاکہ اسے اپنے ناجائز مطالبات کے حصول کا موقع  مل سکے۔

ولایت پورٹل:متحدہ عرب امارات نے سعودی عرب کی پیروی کرتے ہوئے خطے کے مختلف ممالک کو غیر مستحکم کرنے میں ہمیشہ منفی اور تباہ کن کردار ادا کیا ہے، یہ منفی اور تباہ کن کردار 2015 میں یمنی جنگ کے آغاز کے بعد اور بھی واضح ہو گیا، خاص طور ۔
یمن میں متحدہ عرب امارات کا تباہ کن کردار بالکل واضح ہے نیز یمن میں متحدہ عرب امارات کی مداخلت اور اس ملک میں اس کے تسلط پسند انہ مقاصد کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں، متحدہ عرب امارات نے یمن میں گھناؤنا کردار ادا کیا ہے ،اس کے بنیادی ڈھانچے کو تباہ کیا ہے اور ہزاروں بے گناہ یمنیوں کو شہید کیا ہے۔
واضح رہے کہ  متحدہ عرب امارات یمنی وسائل کی لوٹ مار جاری رکھے ہوئے ہے اور یمنی دولت لوٹنے کے لیے سعودیوں سے مقابلہ کر رہا ہے،قابل ذکر ہے کہ یمنی فوج اور عوامی کمیٹیوں کی جانب سے چند روز قبل اماراتی بحری جہاز راوبی کو قبضے میں لینے کی کاروائی یمنی دشمنوں کے لیے ایک صدمہ تھی جس پر انھوں نے بہت شور مچایا کیونکہ وہ یمنی عوام کی صلاحیتوں سے بے خبر تھے۔
 اماراتی بحری جہاز کو قبضے میں لینے کی کارروائی ایک بڑی فتح ہے، جس میں زمینی، سمندری اور فضائی لڑائیوں میں یمنی فوج اور  عوامی کمیٹیوں کی کل فتوحات میں اضافہ ہوا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین