Code : 4073 10 Hit

آل سعود کی شہنشاہت اپنے تاریک مستقبل کی طرف گامزن؛ایک تجزیہ

سعودی عرب سے باہر مقیم ایک سعودی مخالف نے شاہ کی وراثت اور سعودی عرب کی موجودہ صورتحال کے بارے میں ایک مضمون لکھا ہے۔

ولایت پورٹل:سعودی عرب سے باہر مقیم ایک سعودی مخالف مضاوی الرشید نے میڈل ایسٹ ویب سائٹ پر  شائع ہونے والے اپنے ایک مضمون میں  لکھا ہےسعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبد العزیز کو میراث میں ملنے والا شاہی محل اصلاحات نہ ہونے کی وجہ گر رہا ہے، مضمون میں کہا گیا ہےکہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اس ملک میں انتہائی توہین آمیز طریقوں کا استعمال کیا ہے اور اپنے حریفوں اور ان کے اہل خانہ کے خلاف سازش کی ہے، ان اقدامات کے نتائج مستقبل میں بن سلمان کے اس  ملک کے بادشاہ کی حیثیت سے اقتدار میں آنے کے بعد بھی جاری رہ سکتے ہیں۔
سلمان بن عبد العزیز کے دور سے قبل ، بہت سارے ماہرین کا خیال تھا کہ سعودی حکمرانوں نے اس ملک کے شہزادوں اور عوام میں تیل اور فلاحی خدمات کے وجود کی وجہ سے وسیع پیمانے پر قانونی جواز حاصل کرلیا ہے لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ حکمران خاندان کے بااثر افراد  ان کےدشمن بن چکے ہیں  اور سعودی عرب اپنے سماجی حلیف ، حکمرانوں کے حامی مذہبی گروہوں سے محروم ہوچکا ہےاس لیے کہ  وہ مکمل طور پر بن سلمان کی پالیسیوں کے خلاف ہیں، سعودی عرب کے بادشاہ کی موت کے بعد  اس بات کا امکان نہیں ہے کہ بن سلمان تیل کی آمدنی میں کمی ، حزب اختلاف کو دبانے، کورونا وائرس کا پھیلاؤ اور بادشاہ کے ماتحت بہت سارے قبائل  جن کی توہین کی گئی ہے اور ان کی املاک کو خطرے میں ڈال  دیاگیا ہے جیسے بحرانوں کا مقابلہ کرسکیں۔
سعودی عرب کے شمال میں واقع الحویطات اور مرکزمیں عتیبہ قبائل اس کی ایک مثال ہیں جن کے شیخوں اور ممتاز لوگوں کے ساتھ ایسا سلوک کیا جاتا ہے جیسے ان کے ان کو استعمال کرنے کی تاریخ ختم ہوچکی ہے اور وہ تاریخ کا حصہ بن چکے ہیں،سعودی بادشاہ اس ملک کی خواتین کی جانب سے اپنے بنیادی حقوق کی مانگ سن کانپ جاتے ہیں اس لیے کہ خواتین ڈرائیونگ کرنے یا اسٹیڈیم میں جانے کی اجازت پر راضی نہیں ہیں بلکہ وہ اپنے حقوق کی مانگ کر رہی ہیں،تاہم وہ خواتین جو حقیقی سطح پر آزادی نہیں بلکہ سطحی آزادی چاہتی تھیں انہیں قید کردیا گیااور سعودی عرب نے سعودی بادشاہ کی نظروں کے سامنے سعودیوں کی ایک بڑی تعداد کو ملک سے فرار کرتے ہوئے دیکھا ہے۔
آخر میں ، مضاوی نے کہاکہ تیل کی آمدنی میں کمی ، حزب اختلاف کی آواز کو دبانا اور کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے سعودی عرب کا مستقبل انتہائی غیر یقینی ہے  اور اس بات کا امکان نہیں ہے کہ بن سلمان سعودی بادشاہ کی موت کے بعد ان سے نمٹنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔
 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین