Code : 2794 36 Hit

جنرل سلیمانی کا قتل ہمارے لئے تکلیف دہ تھا :روسی سفیر

لبنان میں تعینات روسی سفیر نے قدس فورس کے کمانڈر کو دوستانہ اورایک منفرد شخصیت قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان قتل کے بعد خطے میں امریکی موجودگی کو مزید مشکلات کا سامنا کرے گا۔

ولایت پورٹل:النشرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق لبنان میں تعینات روسی سفیر الیگزینڈر زاسپکن نے قدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کے قتل پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئےامریکہ کی اس کاروائی کوخطرناک قرار دیتے ہوئے کہا اس دہشتگردانہ اقدام کو کوئی دوسرا رخ دینا صحیح نہیں ہے،اسپیکن نے مزید کہا کہ  اس جرم پر توجہ مرکوز کی جانا چاہیے  جس میں سلیمانی اور ان کے ساتھیوں کو نشانہ بنایا گیا  اور اس مجرمانہ کاروائی کو ہلکا دکھانے  کے لئے "امریکی سفارت خانے پر حملہ"  جیسی بے بنیاد دلائل کو بڑھا چڑھا کر پیش کرنے کی کوشش نہ کی جائے،انھوں نے مزید کہا کہ سلیمانی ہمارے دوست اور ساتھی تھے اور ان کی ایک منفرد شخصیت کے مالک تھے ، ہم  ان کا بہت احترام کرتے ہیں ، ہم نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ان کے ساتھ تعاون کیا اور ان کا قتل ہمارے لئے تکلیف دہ ہے،زاسپکن نے مزید کہا کہ  امریکی جارحیت کے بارے میں ایران کا ردعمل بالکل حساب وکتاب کے مطابق تھا  تاہم  ہم اقوام کے خلاف جنگ کے مخالف ہیں اور امید کرتے ہیں کہ جنگ کے امکان سے گریز کیا جائے،انھوں نے مزید کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ خطرات میں اضافے کا ذمہ دار کون ہے اور ہم  یہ بھی جانتے ہیں کہ جوہری معاہدے سے نکل کر سلیمانی کو قتل کرنے کی کوشش کس نے کی نیز کون اس طرح کے دیگر اقدامات سے تناؤ بڑھتا ہے،روسی سفیر کا کہنا ہے کہ کچھ مغربی عہدہ داروں کی جانب سے  پر ایران پر کشیدگی شروع کرنے کا الزام لگانے کی کوشش کی جاتی ہے ، جبکہ واشنگٹن نے ایسے اقدامات اٹھائے ہیں جن اقسے تناؤ میں اضافہ ہوا ہے ، خواہ سیاسی میدان میں ہوں  جیسے جوہری معاہدے سے دستبرداری یا فوجی میدان میں جیسے حالیہ حملہ۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین