Code : 2426 60 Hit

یمن کی ارضی سالمیت ہماری ترجیحات میں شامل ہے: چین

چین نے ریاض معاہدے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن کی ارضی سالمیت اور حاکمیت چین کی ترجیح ترجیحات میں شامل ہے۔

ولایت پورٹل: چین کے وزیر خارجہ کنگ شوانگ نے ابوظبی اور ریاض کے درمیان جنوبی یمن میں قدرت کی تقسیم کاری کے سلسلہ میں  ہونے والے معاہدے پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا بیجنگ یمن کی ارضی سالمیت، اتحاد، آزادی کی مکمل طور پر حمایت کرتا ہے، یاد رہے کہ منگل کو یمن جنگ کے خاتمے کے لیے ریاض میں سعودی نواز  یمن کی مستعفی دولت اور متحدہ عرب امارات نواز جنوبی یمن کی عبوری کونسل کے درمیان ریاض معاہدہ ہوا ہے جس کے سلسلے میں بعض یمنیوں کا کہنا ہے کہ یہ معاہدہ یمن کی تقسیم کے لئے مقدمہ چینی ہے،گلوبل ٹائمز نیوز ایجنسی نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ریاض معاہدے کا سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ چین یمنی حکومت اور جنوبی یمن کی عبوری کونسل کے درمیان ہونے والے ریاض معاہدے کا استقبال کرتا ہے نیز سعودی عرب اور دیگر متعلقہ فریقوں کے مثبت رول ادا کرنے پر خوشحال ہے،چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا مزید کہنا ہے کہا انھیں امید ہے کہ دونوں فریق یمن کے موضوع پر پر گفتگو کریں گے اور یمن اور یمنی عوام کے مفادات کو ترجیح دی جائے گی نیز اس ملک میں جاری بحران کا حل نکالا جائے گا تاکہ اس یہاں امن اور قانون کو دوبارہ سے لاگو کیا جا سکے،ادھر سلامتی کونسل نے ریاض معاہدے کا استقبال کرتے ہوئے دونوں فریقوں سے اس معاہدے کو وسیع پیمانے پر لاگو کرنے کی تاکید کی نیز اس کو یمن میں جاری بحران کے سلسلے میں سیاسی رائے حل کے لئے ایک کوشش قرار دیا ،قابل ذکر ہے کہ اگرچہ کئی ممالک کی طرف سے ریاض معاہدہ کا استقبال کیا جارہا ہے لیکن یمنی عوام اس کی شدید مخالف ہے اس لئے کہ وہ اس معاہدے کوسعودی عرب اور امارات  کے درمیان یمن کی تقسیم کے لیے مقدمہ چینی سمجھتے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम